حکمران غربت نہیں غریب مُکاؤ پالیسی پر عمل پیرا ہیں،بھٹہ مزدور،واسا ورکرز

حکمران غربت نہیں غریب مُکاؤ پالیسی پر عمل پیرا ہیں،بھٹہ مزدور،واسا ورکرز

ملتان (سٹی رپورٹر) ضلع ملتان کے مختلف علاقوں میں موجود انیٹوں کے بھٹہ پر کام کرنے والے مزدوروں اور خواتین واسا درکرز پروین بی بی ، زرینہ بی بی ، راشدہ بی بی ، راضیہ بی بی ، صفیہ(بقیہ نمبر12صفحہ12پر )

بی بی ، زاہدہ بی بی ،کوثر بی بی بشیراں بی بی ، شریفاں بی بی ، شمیم بی بی، نے کہاہے کہ پاکستان میں غریبوں کوئی پرسان حال نہیں ہے حکمران ملک سے غربت نہیں بلکہ غریب مکاؤ پالیسی پر عمل پیراں ہیں جس سے غریب عوام کا استحصال ہو رہاہے انہوں نے کہاہے کہ حکمرانوں کو غریب مزدوروں کی کوئی فکر نہیں ہے بلکہ حکومت اور حکمران امیر اور پیسے والوں کی ہوتی ہے بھٹہ مزدوروں نے کہاہے کہ حکومت کی طرف سے کم از کم آمدنی کا اعلان تو کر دیا جاتا ہے لیکن افسوس اس پر عمل در آمد کوئی نہیں کر تا ہمیں مقرر کر دہ مزدوری سے بھی کم پیسے دےئے جاتے ہیں جس سے دو وقت کی روٹی حاصل کرنا مشکل ہے انہوں نے کہاہے کہ ہمارے والدین بھٹہ مزدور تھے اب ہم بھی بھٹہ پر مزدوری کر رہے ہیں اور ہماری آنے والی نسلیں بھی یہی کام کریں گی انہوں نے کہاہے کہ یکم مئی کیا ہوتا ہمیں کچھ معلوم نہیں ہے ہمیں تو اتنا معلوم ہے کہ جب کوئی چھٹی ہوتی ہے ہماری اس روز کی روزی ختم ہو جاتی ہے اگر ہمارا بس چلے تو ہم عید والے دن بھی چھٹی نہ کریں اسی طرح خواتین سنیٹری ورکرز نے کہاہے کہ واسا سمیت مختلف سرکاری و غیر سرکاری اداروں میں خواتین سنیٹری ورکرز کے ساتھ غیر انسانی سلوک کیا جاتا ہے صبح سے لیکر شام تک کام کرنے کے باوجود پوری تنخواہ نہیں دی جاتی جب بھی کوئی سرکاری و غیر سرکاری تہوا ر یا وی آئی پی موومنٹ ہوتی ہے ہم سے پہلے سے زیادہ کام لیا جاتا ہے لیکن اس کے بدلے میں کوئی اوور ٹائم دیا جاتا ہے نہ کچھ اور سہولیات بلکہ کسی نہ کسی بہانے سے تنخواہ میں سے پیسے کاٹ لئے جاتے ہیں جس کی وجہ سے شدید مشکلات کاسامنا کرنا پڑتا ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...