بہاولپور ملتان 2انتظامی یونٹوں کو مسترد کرتے ہیں،ظہور دھریجہ

بہاولپور ملتان 2انتظامی یونٹوں کو مسترد کرتے ہیں،ظہور دھریجہ

ملتان (سٹی رپورٹر)عمران خان کی طرف سے جنوبی پنجاب صوبہ کی حمایت (بقیہ نمبر34صفحہ7پر )

کا اعلان مبہم اور غیر واضح ہے ۔ملتان بہاولپور کو ایک دوسرے سے لڑانے کیلئے ملتان و بہاولپور کے نام سے دو انتظامی یونٹوں کے شوشے چھوڑے جا رہے ہیں۔ ٹانک ، ڈی آئی خان ، میانوالی ، جھنگ، بھکر کے بغیر کوئی صوبہ قبول نہیں کرینگے ۔ ان خیالات کا اظہار سرائیکستان قومی کونسل کے اجلاس میں کیا گیا۔صدارت سرائیکستان قومی کونسل کے مرکزی صدر ظہور دھریجہ نے کی ۔ اجلاس میں عابد سیال ، حاجی عید احمد، طاہر دھریجہ ،مُعیز علی بھٹہ ، ملک امجد دینو کھوکھر، افضال احمد، نعمان سیال ، حسن علی ، رضوان احمد ، ملک وسیم ، ساجد سندھو، شریف بھٹہ ، جام ایم ڈی، وسیم کھوکھر ، حنیف اللہ کھوکھر، ملک جبران، وقاص اعوان ، زبیر دھریجہ سمیت دیگر نے شرکت کی ۔ اجلاس میں ڈی آئی خان میں دہشت گردی کے واقعات اور وزیرستان میں چار سرائیکی مزدوروں کے بیدردی سے قتل پر شدید مذمت کرتے ہوئے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا گیا اور واضح کیا گیا کہ توسیع پسند قابض قوتوں کی طرف سے سالہا سال سے ڈی آئی خان اور ٹانک میں خوف و ہراس کی کیفیت اور بد امنی کی حالت اس لئے پیدا کی جا رہی ہے کہ مقامی لوگ نقل مکانی کرنے پر مجبور ہوں اور یہ آسانی کے ساتھ ڈی آئی خان و ٹانک پر قابض ہو سکیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ظہور دھریجہ نے کہا کہ عمران خان نے لاہو رکے جلسے میں جنوبی پنجاب صوبہ کی حمایت کی ہے۔ جو کہ مبہم اور غیر واضح ہے۔ اس سے اس بات کا پتہ نہیں چلتا کہ کونسے اضلاع شامل ہیں ۔ یہ بھی نہیں معلوم کہ ٹانک و دیرہ اسماعیل خان اس میں ہیں یا نہیں؟ اسی طرح آجکل جنوبی پنجاب صوبہ محاذ بھی وجودمیں آ چکا ہے لیکن وسیب کے لوگ اس لفظ کو گالی سمجھتے ہیں اور لغوی اعتبار سے یہ درست نہیں کہ ٹانک ، ڈی آئی خان ، میانوالی اوربھکروغیرہ پنجاب کی جنوب میں نہیں آتے ۔ظہور دھریجہ نے کہا کہ سرائیکی وسیب کی جغرافیائی و ثقافتی وحدت میں تفرقہ پیدا کرنے کیلئے بہاولپور اور ملتان کے دو انتظامی یونٹوں کے شوشے چھوڑے جا رہے ہیں ‘ جسے وسیب کے کروڑوں افراد مسترد کرتے ہوئے صوبہ سرائیکستان کے قیام کا مطالبہ کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ن لیگ وسیب دشمنی بند کر کے سرائیکی صوبے کے قیام کیلئے اقدامات کرے۔

ظہور دھریجہ

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...