پہلے ملکی ساختہ لڑاکا طیارے پر کام شروع، 5 برس بعد فضاﺅں میں ہوگا

01 مئی 2018 (13:19)

 اٹک (ویب ڈیسک) پاکستان ائیرفورس نے خود انحصاری کی جانب پہلا قدم اٹھاتے ہوئے ایوی ایشن سٹی کامرہ میں فیوچر جنریشن لڑاکا طیارے پر کام کا آغاز کردیا ہے، ایف 16 اور جے ایف 17 تھنڈر کا ہم پلہ ہونے کے ساتھ دنیا کی جدید ترین ٹیکنالوجی سے لیس ہوگا، دشمن کا راڈار بھی بمشکل ڈھونڈ سکے گا۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

روزنامہ 92 کے مطابق مضبوط دفاع اور فضائیہ کا غیر ملکی طیاروں پر انحصار کم کرنے کے لئے ائیرفورس کے انجینئرز دن رات کام کررہے ہیں، 100 فیصد مقامی طور پر تیار کردہ طیارہ اگلے 5 برس میں تیار ہوجائے گا، منصوبے کو ابتدائی طور پر فیوچرجنریشن لڑاکا طیارہ کا نام دیا گیا ہے جسے بعد میں اہم ملکی شخصیت سے منسوب کردیا جائے گا۔

بھارت نے تین د ہائی قبل اعلان کیا تھا کہ وہ اپنے طور پر طیارہ بنارہاہے تاہم ابھی تک کامیاب نہیں ہوسکا۔ ترکی بھی ہم سے زیادہ وسائل کے باوجود ابھی تک منصوبے میں کامیاب نہیں ہوسکا۔ انشاءاللہ قوم دیکھے گی کہ ہم اعتماد پر پورا اتریں گے، اگلے پانچ برس میں پاکستان ائیرفورس کے انجینئرز کا تیار کردہ لڑاکا طیارہ ملکی فضاﺅں میں اڑتا نظر آئے گا۔

مزیدخبریں