کیا ان ارب پتی لوگوں نے بڑھاپے کا علاج دریافت کرلیا ہے؟ ہمیشہ جوان رہنے کے لئے کروڑوں روپے خرچ کرنے کے بعد اب کیا حال ہے؟ جانئے

کیا ان ارب پتی لوگوں نے بڑھاپے کا علاج دریافت کرلیا ہے؟ ہمیشہ جوان رہنے کے ...
کیا ان ارب پتی لوگوں نے بڑھاپے کا علاج دریافت کرلیا ہے؟ ہمیشہ جوان رہنے کے لئے کروڑوں روپے خرچ کرنے کے بعد اب کیا حال ہے؟ جانئے

  


نیویارک(نیوز ڈیسک) سنتے ہیں کہ پرانے دور کے حکیم سدا جوان رہنے کا نسخہ ڈھونڈنے کے لئے جنگلوں میں بھٹکتے پھرتے تھے اور کیمیا دان بھی کسی ایسے کیمیائی مادے کی دریافت میں عمریں گزار دیتے تھے جو بڑھاپے کے بڑھتے قدموں کو روک سکے۔ لگتا ہے کہ آج کے جدید دور میں بھی یہ تلاش ختم نہیں ہوئی، بلکہ دنیا کی کچھ نامور شخصیات کے بارے میں تو یہ باتیں گردش کر رہی ہیں شاید انہوں نے واقعی کوئی ایسا نسخہ ڈھونڈ لیا ہے۔

امیزون کے بانی اور مشہور ارب پتی جیف بیزس کو دیکھ لیجئے۔ ان کی عمر 54 سال ہے اور ان کی دولت کا اندازہ تقریباً 133 ارب ڈالر (تقریباً ڈیڑھ سو کھرب روپے) لگایا گیا ہے۔ حال ہی میں وہ ایلن اینڈ کمپنی سن ویلی کانفرنس میں مختصر بازوﺅں والی شرٹ پہن کر آئے تو لوگ ان کے مضبوط مسل اور تنومند جسم کو دیکھ کر حیران رہ گئے۔ گنجے سر اور باڈی بلڈر جیسے جسم کے ساتھ وہ اپنی عمر سے بہت کم نظر آتے ہیں۔ جیف بیزس کہتے ہیں کہ ان کی قابل رشک صحت کا راز کوئی جادوئی نسخہ نہیں بلکہ یہ ہے کہ وہ گزشتہ کئی سالوں سے باقاعدگی کے ساتھ جم میں جاکر سخت ورزش کرتے ہیں۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

جرمن بزنس مین پیٹر تھیل سدا بہار جوانی کی ایک اور مثال ہیں۔ ان کی عمر 50 سال ہے اور ان کی دولت تقریباً اڑھائی ارب ڈالر (تقریباً پونے دو کھرب روپے) ہے۔ وہ اکثر اس خواہش کا اظہار کرچکے ہیں کہ وہ کم از کم 120 سال تک زندہ رہنا چاہتے ہیں۔ ان کے بارے میںیہ ضرور کہا جاتا ہے کہ وہ جوان رہنے کے لئے ہیومن گروتھ ہارمون کا استعمال کرتے ہیں۔ اگرچہ یہ ہارمون استعمال کرنے والوں کو کینسر کا خطرہ ہوتا ہے لیکن اس کے باوجود وہ اس ہارمون کا استعمال جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے تو پیرا بائیوسس، یعنی اپنے جسم سے سارا خون نکلوا کر کسی نوجوان شخص کا خون اپنے جسم میں داخل کروانے میں بھی دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹوئٹر کے سی ای او جیک ڈورسی کی عمر 41 سال ہے اور ان کی کل دولت ساڑھے تین ارب ڈالر (تقریباً چار کھرب روپے) ہے۔ گزشتہ کئی سالوں سے جیک نے بھی اپنی قابل رشک صحت سے لوگوں کو حیران کر رکھا ہے۔ انہوں نے اپنی سدا بہار جوانی کے بارے میں بات کرتے ہوئے بتایا کہ وہ روزانہ آدھے گھنٹے کے لئے مراقبہ کرتے ہیں جبکہ دن میں متعدد بار سات منٹ کی ورزش کرتے ہیں۔ وہ ہفتے کو کام سے چھٹی کرتے ہیں اور سیر و سیاحت سے لطف اندوز ہوتے ہیں جبکہ اتوار کے روز بھی کام نہیں کرتے بلکہ صرف سوچ بچا رپر اپنا وقت صرف کرتے ہیں۔ دو دن وہ کام سے چھٹی ضرور کرتے ہیں لیکن باقی پانچ دنوں میں بے پناہ کام کرتے ہیں۔ وہ پیر سے جمعے تک روزانہ 16 گھنٹے کام کرتے ہیں۔ ویسے ہمارے ہاں تو سمجھا جاتا ہے کہ زیادہ کام سے آدمی بیمار پڑ جاتا ہے۔ ایسی سوچ رکھنے والوں سے ضرور پوچھنا چاہئیے کہ جیک کے بارے میں ان کا کیا خیال ہے؟

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...