مزدوروں کے خون پسینے کی کمائی پر سرمایہ دار عیش کر رہاہے،جس معاشرے میں مزدور کی عزت نہ ہو ،وہ معاشرہ ترقی نہیں کر سکتا:سینیٹر سراج الحق

مزدوروں کے خون پسینے کی کمائی پر سرمایہ دار عیش کر رہاہے،جس معاشرے میں مزدور ...
مزدوروں کے خون پسینے کی کمائی پر سرمایہ دار عیش کر رہاہے،جس معاشرے میں مزدور کی عزت نہ ہو ،وہ معاشرہ ترقی نہیں کر سکتا:سینیٹر سراج الحق

  


لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ موجودہ نظام مزدور اورمحنت کش کو ریلیف دینے میں ناکام ہو چکاہے، ظلم و جبر اور استحصال پر مبنی نظام نے سترسال میں مزدوروں اور کسانوں کو ترقی کرنے اور آگے بڑھنے کا موقع نہیں دیا،کسانوں کی محنت کاپھل جاگیرداراور وڈیرے کھاتے ہیں اور مزدوروں کے خون پسینے کی کمائی پر سرمایہ دار عیش کر رہاہے،سرمایہ داروں کے کارخانے اور فیکٹریاں بڑھتے رہے جبکہ مزدور کے گھر کا چولہا بھی بجھ گیا ،جس معاشرے میں مزدور کی عزت نہ ہو ،وہ معاشرہ ترقی نہیں کر سکتا ،اسلام نے محنت کشوں کو اللہ کا دوست قرار دیااور حضور نے مزدور کے ہاتھوں کو بوسہ دے کر فرمایا کہ حلال روزی کمانے والے ہاتھوں کو جہنم کی آگ نہیں چھوئے گی،حکومت کو ریلوے مزدوروں کا احسان مند ہوناچاہیے کہ انہوں نے محنت و مشقت سے ریلوے کے پہیے کو دوبارہ چلادیا ہے ،نااہل حکمرانوں نے دنیا کی بہترین ایئر لائن پی آئی اے اور ریلوے کو تباہ کر دیاتھا۔

ان خیالات کااظہار انہوں نے ریلوے واشنگ لائن لاہور میں مزدوروں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے پروگرام سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ،اس موقع پر نیشنل لیبر فیڈریشن پاکستان کے صدر رانا محمود علی ، صدر پریم یونین و سیکرٹری جنرل لیبر فیڈریشن حافظ سلمان بٹ ،امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد اور سیکرٹری اطلاعات جماعت اسلامی قیصرشریف بھی موجودتھے،قبل ازیں سراج الحق نے ریلوے مزدوروں کے ساتھ واشنگ لائن میں عملاً کام میں حصہ بھی لیا  بعدازاں سراج الحق نے مزدوروں اور قلیوں کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھایا ، اس سے قبل سراج الحق نے مزدوروں کے عالمی دن کے موقع پر منصورہ میں مرکزی دفاتر کے سٹاف اور صفائی و سیکیورٹی کے عملہ کے ساتھ بیٹھ کر ناشتہ کیا اور فرداً فرداً ان کے مسائل سنے اور مسائل کے حل کے لیے ضروری ہدایات دیں۔

سینیٹر سراج الحق نے اس موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ جب تک ظلم و جبر کا یہ استحصالی نظام مسلط ہے ، ملک ترقی نہیں کر سکتا۔ مزدور سالانہ بیس ارب ڈالر کا زر مبادلہ کما کر پاکستان بھیجتے ہیں اور یہاں بیٹھے کرپٹ حکمران وہی دولت چوری کر کے بیرونی بنکوں میں منتقل کر دیتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ جب ریل چلتی تھی تو ہر طرف ریل پیل تھی اور ریلوے مزدور بھی خوشحال تھا لیکن جب حکمرانوں نے اس قومی ادارے کو اپنی من مانیوں کا مرکز بنالیا تو نہ صرف ریل کا پہیہ رک گیا بلکہ ریلوے ملازمین کے گھروں کے چولہے بھی ٹھنڈے ہوگئے اور پھر حکمرانوں نے ان مزدوروں کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ۔ انہوں نے کہاکہ مزدور کے بچوں کے لیے تعلیم کا کوئی انتظام ہے نہ اسے علاج کی سہولت ملتی ہے ،جماعت اسلامی اقتدار میں آ کر مزدوروں کو کارخانوں اور فیکٹریوں اور کسانوں کو کھیتوں کی پیداوار میں شامل کرے گی،حکمران اپنا علاج بیرون ملک کراتے ہیں اس لیے انہیں تباہ حال ہسپتالوں سے کوئی سروکار نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ نبی مہربانﷺ  مزدوروں سے بہت محبت کرتے تھے ،انہوں نے غزوہ خندق کے موقع پر خندق کھودنے میں مزدوروں کی طرح کام کیا ،اسی لیے ہم سمجھتے ہیں کہ مزدوروں کے ساتھ اظہار یکجہتی کا اصل دن غزوہ خندق کا دن ہے۔

مزید : قومی


loading...