خیبر پختونخوا کا بینہ: 15مئی تک لاک ڈاؤن میں توسیع، پاور کمپنی قائم، فرانزک ایجنسی بنانے کا فیصلہ

  خیبر پختونخوا کا بینہ: 15مئی تک لاک ڈاؤن میں توسیع، پاور کمپنی قائم، فرانزک ...

  

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک)خیبرپختونخوا حکومت نے کورونا وائرس کی وجہ سے صوبے میں جزوی لاک ڈاؤن میں 15 مئی تک توسیع کردی۔وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا کے مشیر اطلاعات اجمل وزیر نے کہا ہے کہ تندور اور دودھ و دہی کی دکانیں شام 4 بجے کے بعد بھی کھلی رہیں گی جبکہ مال مویشی منڈیوں کو بھی کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔پشاور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے اجمل وزیر نے کہا کہ کورونا سے شہید ہونے والے فرنٹ لائن ملازمین کو 70 لاکھ روپے کا پیکج دیا جائے گا۔ صوبائی کابینہ نے کے پی پاور ٹرانسمیشن اینڈ گرڈ سسٹم کمپنی کے قیام کی منظوری دے دی ہے، صوبہ اپنا گرڈ اور ٹرانسمیشن نظام قائم کر سکے گا۔ اس کے علاوہ کے پی ایپیڈیمک کنٹرول اینڈ ایمرجنسی ریلیف آرڈیننس کے نفاذ کی منظوری بھی دے دی گئی ہے، آرڈیننس کے تحت متاثرہ افراد کو آئسولیشن میں رکھا جاسکے گا، وبا کی صورت میں اجتماعات پر پابندی لگائی جا سکے گی۔ تعلیمی ادارے، خاندان کے سربراہ زیر کفالت افراد کے متاثر ہونے کی اطلاع دینے کے پابند ہوں گے۔ پبلک ٹرانسپورٹ، ریسٹورینٹ، ہوٹلز کے انچارج زیر کفالت افراد کے متاثر ہونے کی اطلاع دینے کے پابند ہوں گے، آرڈیننس کی خلاف ورزی پر سزائیں اور جرمانے بھی تجویز کیے گئے ہیں۔ وبا کی صورت میں عوام کو ریلیف دینے کے لیے اقدامات کو بھی قانونی تحفظ دیا گیا ہے۔ 6 ہزار سے زائد فیس وصول کرنے والے تعلیمی ادارے فیسوں میں 20 فیصد رعایت دیں گے۔ 6 ہزارسے کم فیسیں وصول کرنے والے 10 فیصد رعایت دیں گے۔ کوئی مالک اپنے کرایہ دار کو کرایہ کی عدم ادائیگی کی صورت میں 3 ماہ تک کے لیے بے دخل نہیں کر سکے گا۔صوبائی کابینہ نے خیبرپختونخوا فرانزک سائنس ایجنسی بل 2020 کے مسودے کی منظوری بھی دی جس کے تحت صوبے میں فرانزک سائنس ایجنسی کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔کے پی کنٹرول آف نارکوٹکس ایکٹ 2019 کے تحت قابل سزا مقدمات کی سماعت کیلئے اسپیشل کورٹس کے قیام کی منظوری دی گئی ہے۔صوبائی کابینہ نے کے پی لوکل کونسل حلقہ بندی کے رولز 2019 کی منظوری دے دی ہے، کے پی لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2013 میں بعض ترامیم کی منظوری دے دی گئی ہے۔

کے پی کابینہ

مزید :

صفحہ اول -