قادیانیوں کی قومی اقلیتی کمیشن میں شمولیت کا اقدام چیلنج

قادیانیوں کی قومی اقلیتی کمیشن میں شمولیت کا اقدام چیلنج

  

لاہور (نامہ نگار خصوصی) قومی اقلیتی کمیشن میں قادیانیوں کی مبینہ شمولیت کولاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا گیا، اس سلسلے میں شہری مسعود احمد ریحان نے درخواست دائر کی ہے جس میں وزیر اعظم، وفاقی وزارت مذہبی امور، امام بادشاہی مسجد مولانا عبدالخبیر آزاد اور قادیانی کمیونٹی کو فریق بنایا گیا ہے،درخواست میں کہا گیا ہے کہ ختم نبوت پر یقین رکھنے والا شخص ہی مسلمان کہلا سکتا ہے، آئین میں قادیانیوں کو متفقہ طور پر غیر مسلم قرار دیا گیا ہے، وفاقی کابینہ نے قومی اقلیتی کمیشن کی تشکیل نو اور قادیانیوں کو بھی اس کمیشن کا ممبر مقرر کرنے کی منظوری دی ہے،کمیشن میں قادیانیوں کی شمولیت سے ملک میں انتشار اور افراتفری پھیلنے کا خدشہ ہے، قادیانی غیر آئینی طور پر شعائر اسلام کا استعمال کرتے ہیں، کمیشن میں شمولیت کے بعد قادیانی کھلم کھلا تبلیغ اور شعائر اسلام کا استعمال کرینگے، قادیانیوں کے شعائر اسلام کے استعمال اور تبلیغ سے ملک میں خانہ جنگی ہونے کا خطرہ ہے،قادیانیوں کو کمیشن میں شامل دیگر اقلیتوں کی طرح حقوق نہیں دیئے جاسکتے، مرزا قادیانی کے عقائد کی وجہ سے دیگر اقلیتوں کے مذہبی جذبات متاثر ہوں گے، قومی اقلیتی کمیشن میں قادیانیوں کی شمولیت کی کالعدم قرار دی جائے۔

قومی اقلیتی کمیشن

مزید :

صفحہ آخر -