ایک ہفتے کے دوران 3اہلکاروں کی ہلاکت‘لائن سٹاف میں تشویش کی لہر دوڑ گئی

ایک ہفتے کے دوران 3اہلکاروں کی ہلاکت‘لائن سٹاف میں تشویش کی لہر دوڑ گئی

  

ملتان(نیوز رپورٹر)پاور ڈویڑن،نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا)اور بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی ناقص پالیسی کے باعث لائن سٹاف کی ہلاکتوں کا سلسلہ(بقیہ نمبر51صفحہ6پر)

جاری ہے۔ایک ہفتہ میں تین لائن مین مہلک حادثات کا شکار ہو لر موت کے منہ میں چلے گئے۔ہائیڈروورکرز یونین کی سیفٹی ہدایات بھی کسی کام نہ ا? سکیں۔ملک بھر میں لائن سٹاف میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔لاہور الیکٹرک سپلائی کمپنی (لیسکو)کے لائن مین محمد علیم،سکھر الیکٹر ک سپلائی پاور کمپنی (سیسکو)کیاسسٹنٹ لائن مین محمد یاسین سولنگی اور پشاور الیکٹرک سپلائی کمپنی (پیسکو)کیلائن مین مظہر علی ڈیوٹی کے دوران کرنٹ لگنے سے جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔واپڈا میں کرنٹ لگنے سے ہلاک اور جاں بحق ہونے والے ملازمین کی تعداد دنیا کے دیگر ممالک کے مقابلے میں سب سے زیادہ ہے۔عام شہریوں کی کرنٹ لگنے سے ہونے والی ہلاکتوں میں بھی پاکستان نمبر ون ہے لیکن ان مہلک اور غیر مہلک حادثات سے بچاو? کے لئے کوئی مستقل پالیسی اور منصوبہ بندی نہیں بنائی جا سکی ہے۔

لائن سٹاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -