شہری کی ہیپاٹائٹس سے ہلاکت،محکمہ صحت کی پھرتیاں، گھروالوں کوقرنطینہ کردیا

شہری کی ہیپاٹائٹس سے ہلاکت،محکمہ صحت کی پھرتیاں، گھروالوں کوقرنطینہ کردیا

  

خانیوال (نمائندہ پاکستان) ہپا ٹائٹس مریض کو ڈاکٹروں نے کرونا بنا دیا مریض نے کرونا وارڈ میں تڑپ تڑپ کر جان دے دی اور رپورٹ نیگٹیو اگئی تدفین کا عمل جاری تھا پولیس نے موقع پر پہنچ کر لوگوں کو قبرستان سے بھگا دیا میت کے ساتھ لائی گئی چار پائی، چاردریں (بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

اور کپڑوں کو پولیس نے قبرستان میں جلا دیا میت کو دفنانے کے لیے آنے والے افراد کے نمونے لے کر انہیں قرنطینہ کر دیا گیا علاقہ مکین شدید پریشانی میں مبتلا۔ تفصیلات کے مطابق نواحی علاقہ کری والا شام کوٹ کا رہائشی محکمہ زراعت کا سرکاری ملازم جو کہ عرصہ دراز سے ہپا ٹائٹس، دل جگر اور گردوں کے مرض میں مبتلا تھا تین روز قبل اسکی حالت شدید غیر ہونے پر اسے طبی امداد کے لیے نشتر ہسپتال ملتان داخل کروا دیا گیا آفرین ہے ڈاکٹروں نے جنہوں نے مریض کا چیک آ پ کیے بغیر اسے کرونا کے شعبہ میں کرونا وارڈ میں منتقل کر دیا اس کے خون کے نمونے لے کر لیبارٹری بھجوا دیئے گئے مذکورہ مریض نے 24 گھنٹے مذکورہ وارڈ میں رہ کر جان آفرین کے سپرد کر دی ورثاء نے میت لے جانا چاہی تو ڈاکٹروں نے میت دینے سے انکار کر دیا کہ مرحوم کے بلڈ ٹیسٹ آنے کے بعد میت حوالے کی جائے گئی رپورٹ نیگٹیو آنے کے بعد میت ورثاء کے حوالے کر دی گئی ورثاء نے گزشتہ روز آبائی علاقہ کر لی والا میں جنازہ بڑھایا اور میت تدفین کے لیے قبرستان لے گئے تدفین کا عمل جاری تھا کہ تھانہ صدر پولیس کبیروالہ آگئی او رمیت کو کرونا قرار دے کر تدفین کرنے والے افراد کو قبرستان سے بھگا دیا پولیس کو نیگیٹو رپورٹ بھی موقع پر دیکھائی گئی مگر پولیس نہ مانی اور تدفین میں صرف گھر کے 5 افراد کو ہی شامل ہونے دیا پولیس نے میت کے ساتھ لائی گئی چار پائی چادروں کو قبرستان میں ہی آگ لگا دی محکمہ صحت نے کو گھر والوں کے نمونے لیکر انہیں قرنطینہ کر دیا۔

پھرتیاں

مزید :

ملتان صفحہ آخر -