2سال گزرنے کے باوجود تہرے قتل کے ملزم آزاد، ورثاء کا احتجاجی مظاہرہ

2سال گزرنے کے باوجود تہرے قتل کے ملزم آزاد، ورثاء کا احتجاجی مظاہرہ

  

ڈیرہ غازیخان (سٹی رپورٹر):دوسال گزرنے کے باوجود تہرے قتل کے نامزد ملزمان آزاد، عدم گرفتاری پر ورثا ء کاآر پی او آفس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ، (بقیہ نمبر29صفحہ6پر)

ملزمان نے محمد جمیل،ندیم اور شیر محمد کو فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا،،اگر ملزمان گرفتارنہ کئے گئے تو وزیر اعلی پنجاب ہاؤس کے سامنے خود سوزی کرلیں گے،عبدالرزاق۔تفصیلات کے مطابق دو سال قبل تھانہ سخی سرور کے علاقے چک مغلومیں دیرینہ دشمنی کی بنا پر ملزمان عبدالرزاق،سیف اللہ،دین محمد،دودہ،بشیر احمد،محمد ظریف،محمد حنیف اور شملہ وغیر ہ نے محمد جمیل،ندیم اور شیر محمد کو فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا اور موقع سے فرار ہو گئے تھے،جس پر تھانہ سخی سرور نے مقتول ندیم کے والد قیصرعباس کی مدعیت میں مقدمہ نمبر 135/18بجرم 302,109,148,149 ت پ درج کیا تھا لیکن دو سال گزرنے کے باوجود پولیس ایک بھی ملزم کو گرفتارنہ کرسکی، مقتول کے بھائی عبدالرزاق نے صحافیوں کو بتایا کہ تفتیشی آفیسر غفار برمانی نے مبینہ طور پر ملزمان سے سازباز ہوکر ملزمان کو بے گناہ قرار دے دیا،ورثاء نے مطالبہ کیا ہے کہ تہرے قتل کے نامزد ملزمان گرفتار کئے جائے ورنہ ہم وزیراعلی ہاوس کے سامنے خود سوزی کرلیں گے۔

آزاد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -