4افراد قتل، حادثات میں 6جاں بحق، خاتون کی خودکشی

      4افراد قتل، حادثات میں 6جاں بحق، خاتون کی خودکشی

  

ملتان، رحیم یارخان، خانقاہ شریف، کوٹ ادو، ر وجھان، مظفرگڑھ(نیوز رپورٹر، نمائندگان پاکستان)مختلف واقعات میں 4افراد کوقتل کردیا گیا 6افراد حادثات میں جاں بحق ہوگئے جبکہ خاتون نے خود کشی کرلی تفصیل کے مطابقمنٹھار کے نواحی چک نمبر 129 پی کے رہائشی دادق خان نے گلی میں تیز رفتاری سے موٹر سائیکل چلانے سے اسرار احمد کو منع کیا جس پر وہ مشتعل ہو کر گھر گیا اور اپنے ولد عبدالغفار کو ساتھ لے کر(بقیہ نمبر18صفحہ6پر)

واپس گلی میں آگیا۔دونوں مسلح باپ بیٹے نے آتے ہی دھمکیاں دینی شروع کر دی اور 32 بور پسٹل سے سیدھے فائر کرنا شروع کردیئے جس کے نتیجہ میں دادق خان،محمد حق اور داد محمد شدید زخمی ہو گئے۔ فائرنگ کی آواز سن کر اہل علاقہ کو آتا دیکھ کر باپ، بیٹا ملزمان موقع سے فرار ہو گئے، زخمی ہونے والے دادق خان اور محمد حق کوورثاء نے طبی امدادکے لئے ہسپتال منتقل کیا تاہم دونوں زخمی ہسپتال پہنچنے سے قبل ہی راستے میں دم توڑ گئے جبکہ زخمی محمدداد کو ہسپتال میں طبی امداد کی فراہمی کا سلسلہ جاری ہے۔ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر منتظر مہدی نے واقعہ بارے فوری نوٹس لیتے ہوئے مقدمے کے اندراج اور ملزمان کی گرفتاری کا حکم دے دیا جس پرپولیس تھانہ منٹھار نے موقع پر پہنچ کر مقتولین کی نعشیں تحویل میں لے کر پوسٹمارٹم کے لئے ہسپتال منتقل کر دیں جبکہ زخمی ہونے والے محمد داد کو شیخ زید ہسپتال رحیم یارخان منتقل کردیا گیا۔ایس ایچ او تھانہ منٹھار رانا محمد عارف نے نفری کے ہمراہ بروقت کاروائی کرتے ہوئے دونوں ملزمان عبدالغفار اور اسرار احمد کو گرفتار کر لیا،تھانہ منتقل،ورثاء کی رپورٹ پر پولیس نے مقدمہ درج کر کے کارروائی شروع کر دی۔رابطہ کرنے پر ایس ایچ او منٹھار رانا محمد عارف نے میڈیا کو بتایا کہ مقدمہ کو حقائق اور میرٹ پر یکسو کرتے ہوئے انصاف کے تمام تقاضے پورے کئے جائیں گے۔جبکہخانقاہ شریف کے موضع رنگ پور میں کے رہائشی گوندل گروپ اور بلوچوں کے نوجوانوں میں ایک ہزار موبائل فون کے بقایا پر گذشتہ روز جھگڑا ہوگیا اور گوندل گروپ کے لڑکوں نے بلوچ گروپ کے محمد فیض بلوچ کو فائرکرکے قتل کردیا پولیس نے نعش اپنے قبضہ میں لے کر پوسٹ مارٹم کے بعد ورثہ کے حولے کردی ہے اور ملزمان کو گرفتارکرنے کے لیے چھاپے مارہی ہے ادھر تھانہ محمودکوٹ کے علاقہ موضع کہاوڑبستی جہان خان کے رہائشی سرفراز حسین شاہ کا اپنے چچازاد صفدر حسین شاہ سے رقبہ سے بھوسہ کے ٹرالی نہ گزارنے دینے پر جھگڑا ہوا،جس کا سرفراز کو رنج تھا،گزشتہ روز صفدر حسین سید روزہ افطار کر کے مغرب کی نماز پڑھنے مسجد جا رہا تھا کہ راستہ میں سرفراز سید نے اسے روک لیا اور چھریوں کے پے درپے وار کر اسے لہولہان کردیا جس سے وہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا،قاتل سرفراز سید موقع سے فرار ہوگیا پولیس تھانہ محمودکوٹ نے مقتول کے بیٹے ساجد حسین سید کی مدعیت میں قاتل سرفراز حسین کے خلاف مقدمہ نمبر 155/20زیردفعہ302درج کر کے قاتل کی تلاش شروع کر دی ہے۔ ناگ شاہ کے قریب تیزرفتار ٹرک کی ٹکر سے نامعلوم راہگیر زخمی ہوگیا جو موقع پر ہی زندگی کی بازی ہارگیا جبکہ ٹرک ڈرائیور موقع سے فرار ہوگیا، واقع کی اطلاع پر متعلقہ پولیس نے موقع پر پہنچ کر نامعلوم شخص کی نعش تحویل میں لیکر نشتر ہسپتال کے سرد خانہ منتقل کردی،پولیس کے مطابق جاں بحق ہونے والا راہگیر تھا جس کی شناخت نہ ہوسکی جس کی نعش قبضے میں لیکر ورثا کی تلاش شروع کردی ہے۔علاوہ ازیں مبارک پور بستی ملوک کا رہائشی یاسر کریم موٹرسائیکل پر سوار ہوکر رام کلی بہاولپور بائی پاس کے قریب سے گزر رہا تھا کہ تیزرفتاری کے باعث موٹرسائیکل قابو نہ ہونے کی وجہ سے کھڑے ٹرالر کے نیچے گھس گئی جس کی وجہ یاسر شدید زخمی ہوگیا کو زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی دم توڑ گیا،واقع کی اطلاع پر متعلقہ پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر نعش تحویل میں لیکر ضروری کاغذی کارروائی مکمل کرنے کے بعد ورثا کے حوالے کردی۔ تھانہ شاہوالی کی حدود میں انڈس ہائی وئے میلہ موڑ کے قریب کار موٹر سائیکل کو بچاتے ہوئے روڈ سے نیچے اتر گء کار کراچی سے پشاور جارہی تھی حادثے میں دو نامعلوم بچے جاں بحق ہوگئے جبکہ خیال خان اور ا میاں بیوی سمیت محمد اسلام،امیر سعید،عظمت علی خان پانچ افراد زخمی ہوگئے حادثے سے متاثر کار کا نمبر اے این این 621 بتایا گیا حادثے میں زخمی ہونیوالے افراد قریبی ہسپتال شاہوالی منتقل کردیا گیا۔خان گڑھ میں ٹریکٹر ٹرالی سے گر کر 15 سالہ لڑکا جانبحق, نواحی علاقہ چوہڑپور میں 15 سالہ محمد ارسلان چلتی ہوئی ٹریکٹر ٹرالی پر تیز آندھی چلنے پر خود کو ترپال میں لپیٹنے لگا تو اچانک نیچے جا گرا. اور ٹرالی کے نیچے آ گیا. جس سے وہ شدید زخمی ہو گیا اور موقع پر ہی دم توڑ گیا. فتح پور کمال کا رہائشی ڈیرھ سالہ محمدزین جو کہ بچوں کے ہمراہ گھر کے باہر کھیل رہا تھا کہ اچانک بچوں نے اسے دھکا دے دیا اور وہ سر کے بل پتھر پر جا گرا اور شدید زخمی ہو گیا، ورثاء نے طبی امداد کے لئے شیخ زید ہسپتال رحیم یاررخان منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود سر پر لگنے والی گہری ضرب کے باعث کم سن محمدزین جانبر نہ ہو پایا اور دم توڑ گیا۔گھریلو جھگڑوں سے دلبرداشتہ ہو کر تیس سالہ خاتون نے مال بردار ٹرین تلے آکر خود کشی کرلی،پولیس نے موقع پر پہنچ کر تحقیقات کے بعد نعش تدفین کے لئے ورثاء کے حوالے کر دی۔ تفصیل کے مطابق گذشتہ روز تھانہ کوٹ سمابہ کی حدود ترنڈہ سوائے خان کے علاقہ پکی بستی کی رہائشی 30 سالہ خاتون(ن) زوجہ محمد فیاض نے آئے روز کے گھریلو جھگڑوں سے دلبرداشتہ ہوکرمال بردار ٹرین کے نیچے آ کر خود کشی کر لی۔اطلاع پا کر پولیس نے موقع پر پہنچ کر واقعہ بارے تحقیقات کے بعد خاتون کی نعش تدفین کے لئے ورثاء کے حوالے کر دی۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -