غربت میں لاک ڈاون، ماں نے بھوکے بچوں کو سلانے کیلئے پتھر پکادیئے

غربت میں لاک ڈاون، ماں نے بھوکے بچوں کو سلانے کیلئے پتھر پکادیئے
غربت میں لاک ڈاون، ماں نے بھوکے بچوں کو سلانے کیلئے پتھر پکادیئے

  

نیروبی(ڈیلی پاکستان آن لائن)کینیا میں غربت اور افلاس کے ایک واقعہ نے  ملک بھرکے  دردمند انسانوں کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا ؕواقعہ سامنے آنے کے بعد ملک بھر سےلوگوں کی بڑی تعداد نے خاتون کی مدد کیلیے  رقم بھیجی اورامدادی سامان کا ڈھیر لگادیا۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق  یہ دردناک واقعہ کینیاکے دوسرے بڑے شہر سامبا میں تیس اپریل کو پیش آیا ہے۔ بی بی سی کے مطابق یہ خاتون بیوہ ہیں اور ان کے آٹھ بچے ہیں۔ گھر میں کچھ نہ ہونے اور باہر لاک ڈاون کی وجہ سے ایک بے بس اور مجبور خاتون نے برتن میں پتھر رکھ کر انہیں چولہے پر چڑھا دیا تاکہ بچے اس آسرے میں رہیں کہ ماں کچھ پکارہی ہے اور پھر وہ انتظار کرتے کرتے سو جائیں۔

بچوں کے رونے کی آواز کی سن کر ہمسائے آگئے جس کے بعد یہ واقعہ منظر عام پر آیا۔اس انتہائی افسوسناک واقعے نےحساس  لوگوں کو جنجھوڑ کررکھ دیاجس کے بعد ملک بھر سے انہیں امداد بھجوائی جانے لگی۔

 بی بی سی کے مطابق 8 بچوں کی بیوہ ماں پنینا بہتی کٹساؤ نے اس وقت پتھروں کو پکایا جب ان کے بچے بھوک سے نڈھال ہونے کے بعد ان سے کھانا طلب کر رہے تھے مگر ان کے پاس انہیں کھلانے کو کچھ نہ تھا تو انہوں نے بچوں کو دھوکا دینے کی غرض سے پتھروں کا ہانڈی میں پکانا شروع کیا۔

 کینیا کے ٹی وی چینل کا حوالہ دیتے ہوئے رپورٹ میں  بتایا گیا ہے کہ اس خاتون کے شوہر گزشتہ سال دہشت گردوں کے حملے میں مارے گئے تھے جس کے بعد سے وہ خاتو لوگوں کے گھروں میں کام کرکے گزارا کر رہی تھی تاہم لاک ڈاون کی وجہ سے وہ  اپنے کام پر نہیں جارہی تھی۔

کینیا کے ایک ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے خاتون نے بتایا کہ ان کے بچے پوچھتے رہے کہ ماں کیا بنا رہی ہوجس پر انہوں نے کوئی جواب نہ دیا کیونکہ وہ جانتی تھیں کہ کچھ بھی نہیں پک رہا۔

خاتون کے مطابق اس صورتحال میں قریب ہی رہنے والی ایک خاتون نے ان کی مدد کی ، دوسرے لوگوں کو بتایا اور پھر موبائل پر انہیں اکاونٹ بھی بنادیا جس کے بعد لوگوں نے انہیں رقم اور امدادی سامان بھیجنا شروع کردیا۔

خاتون کے مطابق امداد کا ملنا ان کیلئے ایک معجزہ ہے۔ اور اس پر وہ اپنی ہمسائی سمیت تمام افراد کے شکرگزار ہیں۔

خیال رہے کہ کینیا میں  کورونا وائرس کے مصدقہ مریضوں کی تعدادچار سو سے کم ہے اور اب تک سترہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ صورتحال پر قابوپانے کیلئے حکومت نے مارچ سے لاک ڈاون کررکھا ہے، اس دوران گھر گھر امداد پہنچانے کا کام بھی حکومت کی جانب سے جاری ہے تاہم ہزاروں لوگ اس امداد سے محروم ہیں۔

رپورٹس کے مطابق یہ واقعہ سامنے آنے کے بعد علاقائی گورنر نے خاتون کی مدد کیلئے خصوصی اقدامات کیے ہیں۔

مزید :

کورونا وائرس -