حکومت عوام سے ہاتھ کر گئی ، چپکے سے پٹرولیم مصنوعات پرٹیکسزبڑھا دیئے

حکومت عوام سے ہاتھ کر گئی ، چپکے سے پٹرولیم مصنوعات پرٹیکسزبڑھا دیئے
 حکومت عوام سے ہاتھ کر گئی ، چپکے سے پٹرولیم مصنوعات پرٹیکسزبڑھا دیئے

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) حکومت پاکستان نے چپکے سے پٹرولیم مصنوعات پرٹیکسزبڑھا دیئے اور 35.73 روپے میں خرید کر فی لٹر پٹرول 81.58 روپے میں بیچا جا رہا ہے ۔

دنیا نیوز کے مطابق پیٹرول پر45 روپے 85 پیسے فی لٹر ٹیکس، لیوی، ڈیوٹیز عائد ہے، پیٹرول کی قیمت خرید 35.73 روپے، قیمت فروخت 81.58روپے فی لٹر مقرر کی گئی ہے۔

دستاویزات کے مطابق ڈیزل کے پر 49.11 پیسے فی لٹر ٹیکس، لیوی اور ڈیوٹیز عائد کی گئی ہے، ڈیزل کی قیمت خرید 30 روپے99 پیسے، قیمت فروخت 80 روپے 10 پیسے فی لٹر مقرر کی گئی ہے، ہائی سپیڈ ڈیزل کے ایک لیٹرپر پیٹرولیم لیوی میں 14 روپے 51 پیسے کا اضافہ کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 30 روپے تک ریکارڈ کمی، ایل پی جی 22 روپے کلو مہنگی

ہائی اسپیڈ ڈیزل پر لیوی 15.49روپے سے بڑھا کر 30 روپے فی لٹر کردی گئی، ہائی سپیڈ ڈیزل کے فی لیٹر پر 11 روپے 64 پیسے سیلز ٹیکس الگ سے عائد ہے، حکومت نے مٹی کے تیل پر پیٹرولیم لیوی بڑھاکر کر 18روپے 2 پیسے کردی، لائٹ ڈیزل پر پیٹرولیم لیوی بڑھاکر 11 روپے 18 پیسے کردی گئی ہے۔

دستاویزات کے مطابق ہائی سپیڈ ڈیزل کی سپلائی کاسٹ 30 روپے 99 پیسے فی لیٹر ہے، ہائی اسپیڈ ڈیزل کے فی لیٹر پر 3 روپے 12 پیسے ڈیلر مارجن عائد کیا گیا ہے، ہائی سپیڈ ڈیزل پر او ایم سی مارجن 2 روپے 81 پیسے وصول کیا جارہا ہے۔

ہائی اسپیڈ ڈیزل کے فی لیٹر پر آئی ایف ای ایم 1 روپے 54 پیسے وصول کیا جا رہا ہے، پیٹرول کے فی لیٹر پر پیٹرولیم لیوی میں 6 روپے 60 پیسے کا اضافہ کردیا گیا، پٹرول پر لیوی 17.16 روپے سے بڑھاکر 23.76 روپے کردی گئی۔ پیٹرول کے فی لیٹر پر 11 روپے 85 پیسے سیلز ٹیکس الگ سے عائد ہے۔

دستاویز کے مطابق پٹرول کی فی لیٹر سپلائی کاسٹ 35 روپے 73 پیسے بنتی ہے، پٹرول کے فی لیٹر پر 3 روپے 70 پیسے ڈیلر مارجن وصول کیا جارہا ہے، پیٹرول پر او ایم سی مارجن 2 روپے 81 پیسے وصول کیا جارہا ہے، پیٹرول کے فی لیٹر پر آئی ایف ای ایم 3 روپے 73 پیسے وصول کیا جارہا ہے۔

یادرہے کہ گزشتہ روزپٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 30 روپے لٹر تک کی ریکارڈ کمی کی گئی ہے، 26 ماہ بعد پٹرول کی قیمت 90 روپے لٹر سے نیچے آ گئی۔یہ قیمتیں مزید نیچے آسکتی تھیں لیکن ٹیکسز کی شرح بڑھا دی گئی ۔ وزارت خزانہ کے نوٹیفکیشن کے مطابق پٹرول اور لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 15 روپے لٹر، ہائی اسپیڈ ڈیزل 27 روپے 15 پیسے جبکہ مٹی کے تیل کی قیمت میں 30 روپے 1پیسےفی لٹر کمی کی گئی ہے۔

پٹرول کی نئی قیمت 81 روپے 58 پیسے، لائٹ ڈیزل کی قیمت 47 روپے 51 پیسے جبکہ ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت 80 روپے 10 پیسے ہو گئی۔ مٹی کا تیل 47 روپے 44 پیسے میں دستیاب ہے۔پنجاب اور اسلام آباد میں سی این جی بھی سستی ہو گئی، قیمت میں 12 روپے 50 پیسے کمی کر دی گئی جس کے بعد قیمت 72 روپے فی لٹر ہو گئی، خیبر پختونخوا، سندھ اور بلوچستان میں بھی جلد قیمت کم ہونے کا امکان ہے۔

ادھر ایل پی جی کی قیمت میں 22 روپے فی کلو اضافہ کر دیا گیا، نئی قیمت 112 روپے مقرر کر دی گئی۔ اوگرا نوٹیفکیشن کے مطابق ایل پی جی کے گھریلو سلنڈر میں 256 روپے اضافہ کیا گیا ہے، گھریلو سلنڈر کی نئی قیمت ایک ہزار تین سو تئیس روپے ہو گئی، کمرشل سلنڈر کے دام بھی 983 روپے بڑھ گئے، نئی قیمت کا اطلاق ہو گیا ہے۔

مزید :

بزنس -