اگر ہوا کے اخراج کے بعد بدبو کپڑوں سے باہر نکل آتی ہے تو فیس ماسک کورونا وائرس سے کیسے محفوظ رکھ سکتا ہے؟ معروف پروفیسر نے مشکل سوال کا جواب دے دیا

اگر ہوا کے اخراج کے بعد بدبو کپڑوں سے باہر نکل آتی ہے تو فیس ماسک کورونا وائرس ...
اگر ہوا کے اخراج کے بعد بدبو کپڑوں سے باہر نکل آتی ہے تو فیس ماسک کورونا وائرس سے کیسے محفوظ رکھ سکتا ہے؟ معروف پروفیسر نے مشکل سوال کا جواب دے دیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) سوشل میڈیا پر ایک بحث چھڑی ہوئی تھی کہ جینز کی بہت موٹی پینٹ سے جسم سے خارج ہونے والی بدبو باہر نکل جاتی ہے تو پھر این 95ماسک کورونا وائرس کو کیسے روک لیتا ہے؟ اب ایک امریکی پروفیسر نے اس سوال کا جواب دے کر اس بحث کو ختم کر دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق یونیورسٹی آف ورجینیا کے پروفیسر ٹریور میکل نے بتایا ہے کہ انسانی جسم سے خارج ہونے والی بدبو کے مالیکیولز کا سائز 0.4نینو میٹر تک ہوتا ہے۔ اس کے برعکس کورونا وائرس کا سائز 60سے 140نینومیٹرز کے درمیان ہوتا ہے۔

بدبو کے مالیکیولز کا سائز چونکہ بہت چھوٹا ہوتا ہے لہٰذا وہ جینز کے موٹے کپڑے سے باہر نکل جاتے ہیں، جبکہ کورونا وائرس کا سائز بڑا ہوتا ہے جسے این 95ماسک روک لیتا ہے۔ پروفیسر ٹریور نے مزید تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ ”کورونا وائرس 300نینومیٹرز تک کے سائز کے اجزاءکو روک سکتا ہے جبکہ مختلف قسم کے وائرسز کا سائز 20سے 400نینو میٹرز کے درمیان ہوتا ہے۔ لہٰذا این 95ماسک بیشتر وائرسز کو روکنے کے لیے بہت مو¿ثر ثابت ہوتا ہے۔

مزید :

کورونا وائرس -