پاکستان سے  چند  ماہ قبل برطانیہ جانے والا سینئر ڈاکٹر کورونا سے جاں بحق

پاکستان سے  چند  ماہ قبل برطانیہ جانے والا سینئر ڈاکٹر کورونا سے جاں بحق
پاکستان سے  چند  ماہ قبل برطانیہ جانے والا سینئر ڈاکٹر کورونا سے جاں بحق

  

مانچسٹر (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سے  چند ماہ قبل برطانیہ منتقل ہونے والا سینئر ڈاکٹر برطانیہ میں کورونا وائرس کی وجہ سے جاں بحق ہوگیا۔

ڈاکٹر فرقان علی صدیقی گزشتہ برس اکتوبر میں کراچی سے برطانیہ منتقل ہوئے تھے جہاں وہ وائتھن شا ہسپتال اور رائل مانچسٹر چلڈرن ہسپتال کے ساتھ کام کر رہے تھے۔

ڈاکٹر فرقان صدیقی کے دوستوں کا کہنا ہے کہ  وہ کورونا وائرس ہونے کے بعد گزشتہ 4 ہفتوں سے وینٹی لیٹر پر تھے لیکن اس جنگ میں وہ فتحیاب نہیں ہوپائے۔

ڈیلی مرر کے مطابق برطانیہ میں اب تک کورونا وائرس کی وجہ سے 27 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ ڈاکٹر فرقان علی صدیقی برطانیہ میں کورونا وائرس سے جاں بحق ہونے والے 15 ویں مسلمان ڈاکٹر ہیں۔ برطانیہ میں اب تک 110 ہیلتھ ورکرز کورونا سے ہلاک ہوئے ہیں جن میں سے اکثریت کا تعلق سیاہ فام، ایشین نسل اور دیگر اقلیتی مذاہب سے تھا۔

ڈاکٹر فرقان علی صدیقی نے 90 کی دہائی میں ڈاؤ میڈیکل کالج سے ایم بی بی ایس کیا تھا۔ برطانیہ منتقل ہونے سے پہلے وہ  لیاقت نیشنل ہسپتال میں اے اینڈ ای ڈیپارٹمنٹ کے سربراہ تھے۔

مزید :

برطانیہ -تارکین پاکستان -کورونا وائرس -