”1999ءورلڈکپ کے یہ 3 میچ مشکوک تھے“

”1999ءورلڈکپ کے یہ 3 میچ مشکوک تھے“
”1999ءورلڈکپ کے یہ 3 میچ مشکوک تھے“

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے سابق چیئرمین خالد محمود نے میچ فکسنگ کے حوالے سے نیا پنڈورا باکس کھول دیا ہے جن کا کہنا ہے کہ ورلڈکپ 1999ءکے فائنل سمیت 3 میچز مشکوک تھے۔

تفصیلات کے مطابق انہوں نے کہا کہ پاکستانی ٹیم نے 1999ءکے ورلڈکپ میں بنگلہ دیش اور بھارت کیخلاف میچز صحیح طرح نہیں کھیلے تھے۔ بنگلہ دیش کے ہاتھوں شکست کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا تھا لیکن قومی ٹیم ہار گئی جبکہ فائنل میچ میں ٹاس جیت کر بیٹنگ کرنے کا فیصلہ بھی مشکوک تھا۔

انہوں نے سابق ٹیسٹ کرکٹر سلیم ملک کے ٹیم میں گروپنگ کے حوالے سے بیان ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ سلیم ملک 21 سال پرانی بات اٹھا لائے ہیں، خود ان کے خلاف آسٹریلوی کھلاڑیوں نے میچ فکسنگ کے الزامات لگائے۔جسٹس قیوم کمیشن میں سزاءپانے والے سابق فاسٹ بولر عطاءالرحمان اپنا بیان نہ بدلتے تو وسیم اکرم پر بھی پابندی لگ سکتی تھی،اس معاملے پر قومی ٹیم کے سابق کپتان وسیم اکرم نے موقف دینے سے گریز کیا ہے۔

واضح رہے کہ 1999ءکے ورلڈ کپ کے وقت خالد محمود چیئرمین پی سی بی تھے اور پاکستان کی پوری ٹیم آسٹریلیا کے خلاف فائنل میچ میں 132 رنز پر آؤٹ ہو گئی تھی جو کہ ورلڈ کپ فائنل میں کسی بھی ٹیم کا سب سے کم سکور ہے۔

مزید :

کھیل -