فیصل آباد،نامور عالم دین قاری عبدالحفیظ سپردخاک 

فیصل آباد،نامور عالم دین قاری عبدالحفیظ سپردخاک 

  

لاہور(خصوصی رپورٹ) نامور عالم دین خطیب ایشیا ء قاری عبدالحفیظ کو ہزاروں سوگواران کی موجودگی میں فیصل آباد میں سپرد خاک کردیا گیا۔ان کی نمازجنازہ شیخ کالونی میں انکے بھائی قاری عبدالقدیر کی امامت میں ادا کی گئی جس میں علماء،طلبہ،کارکنوں سمیت تمام مکاتب فکر سے وابستہ سیاسی،مذہبی اور سماجی راہنماؤں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ قاری عبدالحفیظ مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے نائب امیررہے،علامہ احسان الہی ظہیر شہید کے قریبی رفیق بھی رہے۔ انہوں نے تحریک ختم نبوت اور تحریک نظام مصطفی کے دوران قید وبند کی مشقت بھی کاٹی، قاری عبدالحفیظ1937میں اندرون سندھ  کے گاؤں محراب پورہ میں پیدا ہوئے۔ دورہ سندھ کے دوران مولانا محمد حسین شیخوپوری مرحوم کی دعوت پر انہوں نے مسلک اہل حدیث قبول کیا۔وہ1964 میں تبلیغ دین کے سلسلے میں سرگودھا میں آبادہوگئے، پھر وہاں سے 1984 ء   میں محمدی مسجد شیخ کالونی فیصل آباد میں اپنا مستقل مسکن بنالیا اور تادم آخر اسی مسجد میں خطیب رہے۔ انہوں نے60 سال تک ملک وبیرون ملک میں قرآن وسنت کی دعوت اپنے مخصوص پنجابی وعظ میں دی، قرآن کی تلاوت ترنم میں پڑھنے کا ان کا منفرد انداز بے حد مقبول تھے۔وفات سے پہل ا نہوں نے جمعہ بھی پڑھایا جو آخری ثابت ہوا۔  مرحوم نے سوگوران میں بیوہ کے علاوہ پانچ بیٹے اوچھ بیٹیاں چھوڑی ہیں۔مرکزی امیر سینیٹر پروفیسر ساجد میر،ناظم اعلی سینیٹر حافظ عبدالکریم، چیف آرگنائزر حافظ ابتسام الہی ظہیر،ناظم سیاسی امور کاشف نواز رندھاوا نے قاری عبدالحفیظ کی وفات پر گہرے افسوس کا اظہار کیا  ہے۔ سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا کہ قاری عبدالحفیظ کی وفات سے پاکستان ایک نامور مبلغ سے محروم ہوگیا۔ ان کی دینی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔ نمازجنازہ میں مولانا عبدالرشید حجازی،ڈاکٹر عبدالغفور راشد، کاشف نواز رندھاوا،قاری حنیف ربانی،حافظ مسعود عالم،فیصل افضل شیخ،مولانا سبطین شاہ نقوی، رانا شفیق خاں پسروری، حافظ بابر فاروق رحیمی، قاری نویدالحسن لکھوی،قاری حنیف بھٹی، قاری محمود الحسن بڈحیمالوی، مولانا عبدالصمد معاز،قاری بنیامین عابدسمیت دیگر نے شرکت کی۔

 سپرد خاک

مزید :

صفحہ اول -