غربت، بس چلے تو ہم عید والے دن بھی چھٹی نہ کریں، بھٹہ مزدور

غربت، بس چلے تو ہم عید والے دن بھی چھٹی نہ کریں، بھٹہ مزدور

  

ملتان (سٹی رپو رٹر)شہرکے مختلف علاقوں میں موجود انیٹوں کے بھٹہ پر کام کرنے والے مرد و خواتین مزدوروں زرینہ بی بی، فرزانہ مائی، جنت بی بی، پٹھان مائی، غازی (بقیہ نمبر52صفحہ6پر)

عباس، محمد عمران، محمد ریاض، اور محمد صدیق نے روزنامہ پاکستان سے گفتگوکرتے ہوئے کہاہے کہ یوم مزدور کیا ہوتا ہمیں کچھ معلوم نہیں ہے ہمیں تو اتنا معلوم ہے کہ جب کوئی چھٹی ہوتی ہے ہماری اس دن کی دہاڑی ختم ہو جاتی ہے اگر ہمارا بس چلے تو ہم عید والے دن بھی چھٹی نہ کریں حکمران ملک سے غربت نہیں بلکہ غریب مکاؤ پالیسی پر عمل پیراں ہیں جس سے غریب عوام کا استحصال ہو رہاہے انہوں نے کہاہے کہ حکمرانوں کو غریب مزدوروں کی کوئی فکر نہیں ہے بلکہ حکومت اور حکمران امیر اور پیسے والوں کی ہوتی ہے بھٹہ مزدوروں نے کہاہے کہ حکومت کی طرف سے کم از کم آمدنی کا اعلان تو کر دیا جاتا ہے لیکن افسوس اس پر عمل در آمد کوئی نہیں کر تا ہمیں مقرر کر دہ مزدوری سے بھی کم پیسے دیئے جاتے ہیں جس سے دو وقت کی روٹی حاصل کرنا مشکل ہے انہوں نے کہاہے کہ ہمارے والدین بھٹہ مزدور تھے اب ہم بھی بھٹہ پر مزدوری کر رہے ہیں اور ہماری آنے والی نسلیں بھی یہی کام کریں گی مزدوروں کے حقوق کے لئے کام کرنے والی سماجی تنظیموں کے رہنماؤں سرفراز کلیمنٹ، ہائی سینٹ پیٹر اور محمد حسین نے کہاہے کہ حکمران غریبوں کے مسائل حل کرنے میں سنجیدہ نہیں ہیں جس کی وجہ سے غریب آئے دن غربت کی چکی میں پس رہاہے جبکہ امیر امیر تر ہوتا جا رہاہے انہو ں نے کہاہے کہ حکمرانوں کی ناقص حکمت عملی کے باعث پورے ملک میں بدحالی اور افلاس کی صورتحال ہے جس کی وجہ سے نصف آبادی ایک ڈالر یومیہ سے بھی کم پر گزارہ کرنے پر مجبور ہیں انہوں نے کہاکہ 22کروڑ آبادی میں صرف14فیصد شہری ایسے ہیں جن کے پاس پبلک اور پرائیویٹ سیکٹر میں باقاعدہ ملازمتیں ہیں۔اس کے علاوہ اینٹوں کے بھٹہ،،زرعی شعبہ،قالین سازی اور غیر رسمی شعبے میں  مزدور مردوخواتین کام کررہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ جاگیرداری نظام ہمارے ملک کی جڑوں کوکھوکھلا کررہا ہے اور حکمران تمام ترکوششوں کے باوجود اس کو ختم کرنے میں ناکام ثابت ہوئے ہیں۔گزشتہ69برسوں سے محنت کش طبقے کااستحصال کیاجارہا ہے۔سرمایہ داری نظام بھیانک شکل میں آچکا ہے اور وطن عزیز میں حالات بدسے بدترہوتے جارہے ہیں۔جان لیوامہنگائی نے تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی قوت خرید کوبری طرح متاثر کیا ہے۔

بھٹہ مزدور

مزید :

ملتان صفحہ آخر -