کوٹ ادو، نہر7ماہ سے بند، فصلیں  بری طرح متاثر، کاشتکار سراپا ا حتجاج، فوری کارروائی کا مطالبہ

کوٹ ادو، نہر7ماہ سے بند، فصلیں  بری طرح متاثر، کاشتکار سراپا ا حتجاج، فوری ...

  

 کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)  مظفرگڑھ کنیال سے نکلنے والی لوئرکوٹ سلطان نہر جو کہ کئی کلومیٹر پر مشتمل اور کوٹ ادو کے عین وسط سے گزرتی ہے اور سینکڑوں ایکڑ پر مشتمل(بقیہ نمبر40صفحہ7پر)

 رقبہ جات کوسیراب کرتی ہے، اس کے دونوں اطراف کے سینکڑوں کاشتکار، زمیندار اور کسان مذکورہ  نہرکے پانی سے اپنی فصل کوسیراب کرتے ہیں، واضح رہے کہ مذکورہ نہر نومبر میں بند کر کے یکم اپریل کو چلائی جاتی ہے لیکن ماہ اپریل اختتام ہونے کے باوجود مذکورہ نہر میں پانی کی فراہمی نہ کی گئی ہے،سیرابی پانی کی عدم دستیابیوقلت کے باعث مذکورہ نہر سے استفادہ حاصل کرنے والے کسان شدید پریشانی میں مبتلا ہیں اور مہنگے داموں ڈیزل خرید کر اپنی فصلات میں پانی لگانے پر مجبور ہیں جس کی وجہ سے ان کے اخراجات اور پیداواری اہداف بڑھ گئے ہیں اور آئندہ پیداواری اہداف بھی متاثر ہونے کا اندیشہ ہے،نہری پانی کی عدم دستیابی کے باعث فصلات گنا،تل، باجرہ مکئی، کپاس ودیگر چارہ جات اور فصلات کی بڑھوتری بھی متاثر ہورہی ہے، درپیش صورتحال کے باعث علاقہ کے زمینداروں نے محکمہ انہار کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ انہار عرصہ7ماہ سے مذکورہ نہر میں پانی نہیں چھوڑا جو کہ کسانوں کے ساتھ ظلم و زیادتی کے مترادف ہے، کسانوں نے محکمہ انہار کے اعلی حکام سے فوری طور پر نوٹس لینے اور نہر میں پھینک اور پانی کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔

احتجاج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -