وی آئی پی کلچر کی شرمناک ترین مثال، بھارت میں کسی وی آئی پی کے لیے آکسیجن سلنڈر اتارے جانے کے دو گھنٹے بعد خاتون کی موت ہوگئی

وی آئی پی کلچر کی شرمناک ترین مثال، بھارت میں کسی وی آئی پی کے لیے آکسیجن ...
وی آئی پی کلچر کی شرمناک ترین مثال، بھارت میں کسی وی آئی پی کے لیے آکسیجن سلنڈر اتارے جانے کے دو گھنٹے بعد خاتون کی موت ہوگئی
سورس:   Screengrab

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں کورونا وائرس کی صورتحال انتہائی سنگین ہو چکی ہے، ہسپتالوں میں گنجائش ختم اور آکسیجن کا بحران پیدا ہو چکا ہے اور لوگ فٹ پاتھوں پر تڑپ تڑپ جانیں دے رہے ہیں۔ ایسے میں گزشتہ دنوں پولیس کی بربریت اور وی آئی پی کلچر کی ایک ایسی سفاکانہ مثال بھارت میں دیکھنے کو ملی کہ انسانیت شرم سے پانی پانی ہو گئی۔ میل آن لائن کے مطابق یہ واقعہ ریاست اترپردیش کے شہر آگرہ میں پیش آیا جہاں پولیس کسی وی آئی پی کو دینے کے لیے ہسپتال سے ایک خاتون کا آکسیجن سلنڈر اتار کر لے گئے اور اس خاتون کی دو گھنٹے بعد موت واقع ہو گئی۔

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو تیزی سے وائرل ہو رہی ہے جس میں اس خاتون کا 22سالہ بیٹا انمول گوئیل پولیس والوں کی منت سماجت کر رہا ہوتا ہے اور ان کے پاﺅں پڑ رہا ہوتا ہے کہ وہ اس کی ماں کا آکسیجن سلنڈر لے کر نہ جائیں ورنہ وہ مر جائے گی۔ اس پر مستزاد یہ کہ اس سلنڈر کا انتظام بھی انمول اور اس کے چھوٹے بھائی نے خود کیا تھا۔ ہسپتال کی طرف سے انہیں کہہ دیا گیا تھا کہ آکسیجن ختم ہو چکی ہے۔ پولیس اپنی ماں کے لیے خود بیٹوں کا لایا گیا سلنڈر بھی اٹھا کر لے گئی اور انمول کی ماں موت کے منہ میں چلی گئی۔ واضح رہے کہ بھارت میں کورونا وائرس کے مجموعی کیسز 1کروڑ 92لاکھ سے تجاوز کر چکے ہیں جبکہ 2لاکھ 12ہزار اموات ہو چکی ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -