رواں مالی سال میں ایف بی آر کی کارکردگی کیسی رہی؟ ر پورٹ سامنے آگئی

رواں مالی سال میں ایف بی آر کی کارکردگی کیسی رہی؟ ر پورٹ سامنے آگئی
رواں مالی سال میں ایف بی آر کی کارکردگی کیسی رہی؟ ر پورٹ سامنے آگئی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر ) کی رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال میں ٹیکس ادائیگی میں53  فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔

ایف بی آر کے مطابق ادا شدہ ٹیکس گزشتہ سال اس عرصہ میں 33.1ارب روپے تھا۔اس سال ٹیکس گوشوارں کے ساتھ ادا شدہ ٹیکس 50.6ارب روپے رہا ۔ٹیکس گوشوارے داخل کرنے والوں کی تعداد میں 12 فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے ۔انکم ٹیکس گوشوارے داخل کرنیوالوں کی تعداد پچھلے سال اس عرصہ  تک26 لاکھ تھی،یکم مئی 2021 تک انکم ٹیکس گوشوارے داخل کرنےوالوں کی تعداد29  لاکھ ہوچکی ہے۔ریفنڈزپچھلےسال اس عرصہ میں 118ارب روپےتھے،رواں مالی سال اب تک195ارب روپےکے ریفنڈز جاری کئے جا چکے ہیں۔مارچ میں حاصل کردہ 46 فیصد اضافہ سے بھی زائد ہے۔پچھلےسال کےمقابلےمیں اپریل کے ماہ میں  57 فیصد اضافہ تاریخی ہے۔گزشتہ سال اپریل کےنیٹ ریوینیو240ارب روپےکےمقابلے میں57 فیصد اضافہ حاصل ہوا۔اپریل میں ریونیونیٹ کلیکشن384 ارب روپے رہا جبکہ مطلوبہ اضافہ 242 ارب روپے تھا۔ریونیو اس عرصہ کے مقرر کردہ ہدف 3637 ارب روپے سے143 ارب زائد ہے۔جولائی2020 تا اپریل 2021 تک 3780 ارب روپےکا نیٹ ریونیوحاصل کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال اپریل میں65 ارب روپےکی کسٹمز ڈیوٹی حاصل ہوئی۔اس طرح ہدف سے 99 ارب روپے اور 20 فیصد زائد کسٹمز ڈیوٹی حاصل ہوئی۔کسٹمز ڈیوٹی کا مقرر کردہ ہدف 507 ارب روپے تھا۔رواں مالی سال کے پہلے 10ماہ میں 48.55 ارب روپے کی اسمگلڈاشیا ضبط کی گئیں،ضبط شدہ اشیاء میں 32 فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔رواں مالی سال اپریل کے ماہ میں 4.54 ارب روپے کی سمگل شدہ اشیاء ضبط کی گئیں۔کسٹمز ڈیوٹی کا مقررہ ہدف 59 ارب روپے تھا،10 فیصد زائد کسٹمز ڈیوٹی حاصل ہوئی۔

مزید :

قومی -