خوشاب میں ہونے والے ضمنی الیکشن کے دوران دھاندلی سے بچنے کے لیے الیکشن کمیشن نے پلان تیار کرلیا

خوشاب میں ہونے والے ضمنی الیکشن کے دوران دھاندلی سے بچنے کے لیے الیکشن کمیشن ...
خوشاب میں ہونے والے ضمنی الیکشن کے دوران دھاندلی سے بچنے کے لیے الیکشن کمیشن نے پلان تیار کرلیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )این اے 75 ڈسکہ اور این اے 249 کراچی میں ضمنی انتخابات  کے بعد دھاندلی  کے شورنے الیکشن کمیشن کو نیا پلان تیار کرنے پر مجبور کیا ہے۔

دنیا نیوز کے مطابق  چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ  کی زیر نگر انی دھاندلی کی شکایات کے خاتمے کے  پلان ترتیب دے لیا گیا ہے جس کے مطابق پولنگ عملے کی نقل و حرکت کے لیے ہر پولنگ سٹیشن کے لیے الگ گاڑی مختص کی گئی ہے۔ ہر گاڑی میں دو پولیس اہلکار،دو رینجرز اہلکار اور ایک فوکل پرسن موجود ہو گا۔ ریٹرننگ آفیسر کے پاس رابطے کے لیے گاڑی میں موجود پانچوں افراد کے نمبرز ہوں گے۔

پولنگ کب بند ہوئی؟ کس وقت پولنگ سٹیشن چھوڑا اور کہاں پہنچے؟ فوکل پرسن آر اور ڈی آر او کو لمحہ بہ لمحہ اپ ڈیٹ کرے گا۔ ہر پولنگ سٹیشن سے ریٹرننگ آفیسر کے دفتر پہنچنے کا وقت بھی مقرر کر دیا گیا۔خوشاب میں بنائے گئے  115 پولنگ اسٹیشن کا عملہ نتائج مکمل کرنے کے بعد ایک گھنٹے میں آر او آفس پہنچے گا، 65 پولنگ سٹیشنز کے عملے کو فاصلے کے مطابق ڈیڑھ گھنٹے کا وقت دیا گیا۔ زیادہ فاصلے پر موجود 3 پولنگ سٹیشنز کے عملے کے پاس دو گھنٹے کا وقت ہو گا۔ الیکشن کمیشن اور آر او آفس جیو ٹیگنگ کے ذریعے بھی انتخابی عملے پر نظر رکھے گا، 10 مانیٹرنگ ٹیمیں بھی حلقے میں کام کریں گی، صوبائی الیکشن کمشنر پنجاب،الیکشن کمیشن کے ڈی جی آئی ٹی بھی حلقے میں موجود رہیں گے۔ 50 پولیس اہلکاروں پر مشتمل موٹربائیک اسکواڈ بھی حلقے میں موجود ہو گا۔ انتہائی حساس پولنگ سٹیشنز پر 13،حساس پولنگ اسٹیشنز پر 9 پولیس اہلکار موجود ہوں گے۔ نارمل پولنگ سٹیشن پر 6 اہلکار جبکہ دو دراز علاقوں میں 10 اضافی اہلکار بھی تعینات ہوں گے۔

مزید :

قومی -