جنرل ہسپتال آؤٹ ڈورمیں پرچی بنوانے کیلئے کلرکوں کی کمی

جنرل ہسپتال آؤٹ ڈورمیں پرچی بنوانے کیلئے کلرکوں کی کمی

لاہور (جنرل رپورٹر)لاہورجنرل ہسپتال آؤٹ ڈورمیں آنیوالے مریض پرچی بنوانے کیلئے پرچی کلرکس کی قلت اور طویل قطاروں میں وقت کے ضیاع سے پریشان ہوگئے ۔مریض ہوں یاہسپتال اہلکار سب میں قوت برداشت کافقدان ہے۔ مریضوں کاآپس میں الجھنا اورکام کے بوجھ سے بیزارپرچی کلرکس کاان کے ساتھ تلخ بولنامعمول بن گیا۔تفصیلات کے مطابق لاہورجنرل ہسپتال آؤٹ ڈور کے مختلف شعبہ جات میں روزانہ مجموعی طورپر ہزاروں مریض آتے ہیں ،ماضی میں آؤٹ ڈور کے ہرشعبہ میں ایک پرچی کلرک بیٹھتا تھا اورمریض باآسانی پرچی بنواتے تھے مگرجب سے ہسپتال انتظامیہ نے پرچی کلرکس کوان کے شعبہ جات سے نکال کرکسی اورکام پرلگادیا ہے اورصرف دوسے تین پرچی کلرکس کو آؤٹ ڈور کے واش رومزکی دیوار کے ساتھ بٹھادیا ہے دوسری طرف ایمرجنسی بلاک میں بھی صرف دوپرچی کلرک ناکافی ہیں ۔انتظامیہ کے اس عاقبت نااندیشانہ فیصلے کے سبب ایمرجنسی بلاک اورآؤٹ ڈورمیں آنیوالے مریض پرچی بنوانے کیلئے طویل قطاروں میں کھڑے کھڑے مشتعل اورمضطرب ہوجاتے ہیں جبکہ خواتین کیلئے کوئی مخصوص کاؤنٹر نہیں ہے اسلئے خواتین بھی مردمریضوں سے الجھتی رہتی ہیں۔پنجاب حکومت کی طرف سے سرکاری ہسپتالوں کے ایمرجنسی اورآؤٹ ڈورشعبہ جات میں آنیوالے شہریوں سے پرچی کی ایک روپیہ فیس وصول کی جاتی ہے۔

جبکہ پانچ روپے کاسکہ اوردس روپے کانوٹ دینے والے شہریوں کوبقایانہیں دیا جاتا اس کے نتیجہ میں کروڑوں روپے ہڑپ کئے جارہے ہیں ۔ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت پرچی فیس سرے سے ختم کردے یاشہریوں کوبقایاجات کی واپسی یقینی بنائے ۔دوسری طرف لاہورجنرل ہسپتال آؤٹ ڈور کے بالمقابل سائیکل سٹینڈ والے موٹرسائیکل کے دس روپے جبکہ ایمرجنسی بلاک کے نزدیک سائیکل سٹینڈ والے موٹرسائیکل کے پندرہ روپے وصول کررہے ہیں ۔سائیکل سٹینڈز کیلئے مخصوص مقام کی زمین بھی ہموار اورپختہ نہیں ہے اورنہ آنے جانے کیلئے راستہ کشادہ ہے جبکہ مریضوں کی طرف سے باربار احتجاج کے باوجودہسپتال انتظامیہ نے اس طرف دھیان نہیں دیا ۔سٹینڈ والی زمین پختہ ہونے ہونے کے سبب وہاں سے مسلسل دھول اٹھتی جوایک طرف انسانوں کیلئے زہرقاتل جبکہ دوسری طرف ہسپتال کی بیش قیمت مشینری کیلئے مہلک ہے ۔ضرورت اس امر کی ہے کہ سائیکل سٹینڈ پرزائدفیس وصول اورشہریوں کے ساتھ بدتمیزی کرنیوالے ٹھیکیداروں کیخلاف سخت کاروائی کی جائے اورپارکنگ کیلئے مخصوص مقامات

مزید : میٹروپولیٹن 4