برطانیہ میں سینکڑوں پاکستانیوں کی شامت آگئی، تاریخ کے شرمناک ترین مقدمے میں نام آگئے

برطانیہ میں سینکڑوں پاکستانیوں کی شامت آگئی، تاریخ کے شرمناک ترین مقدمے میں ...
برطانیہ میں سینکڑوں پاکستانیوں کی شامت آگئی، تاریخ کے شرمناک ترین مقدمے میں نام آگئے

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانوی شہری رودرہیم میں کچھ عرصہ قبل پاکستانی نژاد مردوں کا ایک گروہ پکڑا گیا تھا جو کم عمر لڑکیوں کو اپنے جال میں پھانس کر منشیات کا عادی بناتا، ان سے جنسی زیادتی کرتا اور پھر انہیں جسم فروشی پر لگا دیتا تھا۔ اب اس حوالے سے سینکڑوں پاکستانیوں کی شامت آ گئی ہے اور ان کا نام بھی اس گینگ میں شامل ہونے کا انکشاف سامنے آ گیا ہے۔ دی انڈیپنڈنٹ کے مطابق ابتدائی طور پر معلوم ہوا تھا کہ اس گینگ کے اراکین کی تعداد ڈیڑھ درجن درندہ صفت انسانوں پر مشتمل ہے لیکن اب یہ تعداد 426تک پہنچ گئی ہے۔

برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی اس برطانوی تاریخ کے شاید سب سے بڑے اور شرمناک جنسی سکینڈل کی تفتیش کر رہی ہے اور اب تک 13مجرموں کو عدالتوں سے سزا دلوا چکی ہے۔ ایجنسی کی تفتیش کے مطابق یہ گینگ 1997ءسے 2013ءتک اپنا مکروہ دھندا چلاتا رہا اور اس دوران 1500سے زائد کم عمر لڑکیاں ان کا نشانہ بنی، جن میں سے اکثر کی عمریں 11اور 12سال تک تھیں۔

ایجنسی کا کہنا ہے کہ اب تک 151افراد کے اس گینگ میں ملوث ہونے کے شواہد سامنے آ چکے ہیں جبکہ 275مزید ایسے پاکستانی نژاد مرد ہیں جو مشکوک ہیں اور اس فہرست میں شامل ہیں۔اس وقت اس سکینڈل سے متعلق 22مختلف تحقیقات چل رہی ہیں اور اس گینگ کی بربریت کا نشانہ بننے والی 290سے زائد لڑکیاں ان تحقیقات کا حصہ ہیں۔ایجنسی کے سینئر تفتیشی افسر پاﺅل ویلیم سن کا کہنا تھا کہ ”یہ جنسی سکینڈل اس نوعیت کا بدترین سکینڈل ہے اور ہم تمام ملزموں کو قانون کے کٹہرے میں لانے کے لیے پرعزم ہیں۔

مزید : برطانیہ