طاقت سے مخالفین کو دبانا حکومت کی خام خیالی ہے‘ لیاقت بلوچ

  طاقت سے مخالفین کو دبانا حکومت کی خام خیالی ہے‘ لیاقت بلوچ

  



ملتان‘ڈیرہ غازیخان (سپیشل رپورٹر‘ سٹی رپورٹر)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان و سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ جماعت اسلامی آئین وقانون کے دائرے میں رہتے ہوئے جدوجہد پر یقین رکھتی ہے اور جمہوری و آئینی بنیادوں پر پرامن احتجاج ہر پارٹی کا حق سمجھتی ہے۔ (بقیہ نمبر10صفحہ12پر)

آزادی مارچ پرامن، مہذب اور اپنے مطالبات پر پیش رفت کر رہاہے۔ اسلام آباد سے ہی اس محنت اور جدوجہد کے نتائج سامنے آئیں گے۔ حکومت اس خام خیالی میں نہ رہے کہ طاقت کے استعمال سے مخالفین کو دبا لے گی۔ طاقت کا ہتھیار خود حکومت کے لیے مہلک ثابت ہوگا۔آئین کے مطابق وزارت عظمیٰ کی تبدیلی کا خیر مقدم کریں گے 88دنوں سے کشمیر میں بدترین کرفیو ہے مگر حکومت کوئی عملی اقدام اُٹھانے اور لائحہ عمل دینے کیلئے تیار نہیں۔ جماعت اسلامی ملک بھر میں مظلوم کشمیریوں سے یکجہتی اور عالمی سطح پر مسئلہ کشمیر کو اُجاگر کرنے کیلئے مہم چلا رہی ہے۔ ان خیا لات کا اظہار ملتان پہنچنے پر کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب راؤ محمد ظفر، ضلعی امیر ڈاکٹر صفدر اقبال ہاشمی، کنور محمد صدیق بھی موجود تھے۔ انہوں نے مزیدکہاکہ پی ٹی آئی رہنما اسد عمر کے انکشافات ہوشربا ہیں۔ تحریک انصاف کو باہر سے نہیں اندر سے بڑ ے بڑے مافیا تیزی سے دیمک کی طرح چاٹ رہے ہیں۔ عمرا ن خان کی جدوجہد کا سارا بیانیہ کھوکھلا اور جھوٹ و فریب ثابت ہورہاہے۔ حکومت کی الٹی گنتی شروع ہو گئی ہے۔ بے کار ٹیم ناکام، کپتان زیادہ دیر اقتدار پر قابض نہیں رہ سکتے۔انہوں نے کہاکہ عمران خان کی معاشی ٹیم پاکستانی معیشت کی نہیں عالمی مالیاتی اداروں کی دوست ہے۔ حکومت جھوٹے اعدادو شمار کے گورکھ دھندے میں اپنا سب کچھ گنوا رہی ہے۔ تاجروں نے ملک گیر شٹر ڈاؤن ہڑتال کے ذریعے اپنی طاقت کا مظاہرہ کردیا ہے حکومتی ہٹ دھرمی اور غیر حکیمانہ عمل قومی معیشت کو اربوں روپے کا نقصان پہنچا گیاہے۔لیاقت بلوچ نے کہاکہ عمران خان حکومت کی غلط حکمت عملی اور بے سمت اقدامات نے قومی معیشت کو تباہ کردیا ہے۔ مہنگائی، بے روزگاری، افراط زر بڑھتا جارہاہے۔ تاجروں نے شٹرڈاؤن احتجا ج کی طاقت کو زندہ کردیاہے۔دریں اثنا جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ 22 نومبر کو سراج الحق کی قیادت میں ڈی جی خان میں یکجہتی کشمیر مارچ ہو گا چنی گوٹھ میں جو حادثہ ہوا اس سے بہت صدمہ ہوا ریلوے کے حادثات مسلسل بڑھتے جا رہے ہیں عمران خان جب اپوزیشن میں تھے تو ایسے واقعات پر حکومت کے مستعفی ہونے کامطالبہ کرتے تھے شیخ رشید اپنی غلطی کوتاہی کو تسلیم کرے اور مستعفی ہو کر آزادی مارچ میں شریک ہو احتجاج کا مسئلہ ہر جماعت کا اپنا حق ہے اسٹیبلشمنٹ اپنی بنائی ہوئی حکومت کی کارکردگی کا خود جائزہ لے، قوم جاننا چاہتی ہے کہ حالیہ بحران کا ذمہ دار کون ہے اور کپتان اپنی ٹیم کا شکوہ کس سے کررہا ہے یہ بات انہوں نے دفتر جماعت اسلامی ڈیرہ غازی خان میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن کی زیر قیادت آزادی مارچ اْن کا جمہوری حق ہے اور اپوزیشن حکمرانوں کے وعدے یاد دلائے تو اس پر سیخ پا ہونے کی ضرورت نہیں ہے انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی نے تمام مشکلات کے باوجود کشمیر کا مسئلہ نہ صرف زندہ ہے بلکہ اہل کشمیر کے حوصلے کا باعث ہے. ملک کے ہر بڑے شہر میں بڑے بڑے کشمیر مارچ مودی کی غیر انسانی پالیسیوں کو بے نقاب کرنے کا ذریعہ بن گئے ہیں. انہوں نے تمام ارکان جماعت سے ازسر نو حلف لیتے ہوئے کہا کہ ان شاء اللہ جماعت اسلامی اپنی سیاسی جدوجہد جاری رکھے گی اور اپنے پلیٹ فارم سے عوام کو اسلامی اور خوشحال پاکستان کے قیام کے لئے تیار کریگی. لیاقت بلوچ کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان نے جتنے دعوے کیے اس کا نتیجہ صفر آرہا ہے کرتارپور راہداری کی ٹائمنگ کشمیر کے مسئلے کے حوالے سے ٹھیک نہیں نیب کا کردار اس وقت مکمل طور پر جانبدار ہے حکومت تاجروں کی طرح اپوزیشن کیسامنے بھی گھٹنے ٹیکے گی جیلوں میں کرپش بد عنوانی ہے قوا نین کے مطابق عملدرآمد نہیں ہے اس موقع پر امیر ضلع جاوید اقبال بلوچ،رکن مرکزی شوریٰ شیخ عثمان فاروق،پروفیسر عطامحمد جعفری،منیر احمد کلاچی، شیخ عبدالستار،رشید احمد اختر،غنا محمد گجر، رانا انیس قمر، ڈاکٹر اشرف بزدار، سجاد احمد بلوچ، شیخ سعد فاروق بھی موجود تھے۔

لیاقت بلوچ

مزید : ملتان صفحہ آخر