فلپ مورس نے 9 ماہ کے مالی نتائج کا اعلان کر دیا

فلپ مورس نے 9 ماہ کے مالی نتائج کا اعلان کر دیا

  



کراچی (پ ر) فلپ مورس (پاکستان) لمٹیڈ نے 30ستمبر،2019ءکو ختم ہونے والے 9 ماہ کے عرصے کے لیے مالی نتائج کا اعلان کر دیا ہے ۔ اِن نتائج کے مطابق کمپنی کو 1,728ملین روپے کا قبل از ٹیکس آپریٹنگ نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔قبل از ٹیکس آپریٹنگ نقصان کی بنیادی وجہ کوٹری میں فیکٹر ی کی بندش کے ذریعے اپنے آپریشنل فٹ پرنٹ کی تنظیم نوکے لیے انتظامی فیصلہ تھا جو پاکستان میں غیر متوقع مالی حالات کے باعث کاروبار کی پائیداری یقینی بنانے کے لیے لازمی تھا۔ اگرمینوفیکچرنگ کی تنظیم نو کے نتیجے میں، کوٹری میں فیکٹری کی بندش کی وجہ سے ملازمین کی علیٰحدگی پر ہونے والے اخراجات اور ایک مرتبہ واقع ہونے والانقصان الگ کر دیا جائے تو ایسی صورت میں، کمپنی نے 30 ستمبر ، 2019ءکو ختم ہونے والے9ماہ کے دوران مذکورہ بالاقبل از ٹیکس آپریٹنگ نقصان کی بجائے 836ملین روپے کا قبل از وقت منافع حاصل کیاہوتا۔اِسی عرصے کے دوران، ٹیکس ادا کرنے والی کمپنیوں کو ٹیکس ادا نہ کرنے والے غیرقانونی شعبے کی جانب سے چیلنجوں کا سامنا رہا جس کا مارکیٹ شیئر، اس وقت، ایک تخمینے کے مطابق تمباکو کی کل مارکیٹ کا 33.9 فیصد ہے۔ اس کی بنیادی وجہ سنہ -19 2018ءکے دوران ٹیکس کی شرح میں دو مرتبہ اضافہ ہے جس کی وجہ سے ٹیکس ادا نہ کرنے والے غیرقانونی شعبے اور ٹیکس ادا کرنے والی کمپلائنٹ انڈسٹری کے درمیان فاصلہ بڑھ گیا۔سگریٹوں پر ٹیکس میں اضافے سے اندیشہ ہے کہ سگریٹ پینے والے بالغ افراد سستی اور غیر ٹیکس ادا شدہ سگریٹوں کا انتخاب کرنے لگیں گے جبکہ غیرٹیکس ادا شدہ اور اسمگل شدہ سگریٹوں کی آسان دستیابی کے باعث اس تبدیلی میں مزید تیزی آجائے گی۔ایک سروے کے مطابق، غیر قانونی سگریٹوں کی وجہ سے قومی خزانے کو تقریباً 44ارب روپے کا نقصان پہنچتا ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر