جسٹس سید مظاہر آنکھوں میں سوئے کے وار سے متاثرہ عیش محمدکو دیکھ کر آبدیدہ

جسٹس سید مظاہر آنکھوں میں سوئے کے وار سے متاثرہ عیش محمدکو دیکھ کر آبدیدہ

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی سوئے مار کر آنکھوں سے محروم کئے گئے کم عمر شہری عیش محمد کی حالت دیکھ کر آبدیدہ ہوگئے،فاضل جج سندر میں عیش محمد کو آنکھوں سے محروم کرنے والے ملزموں کی سزا کے خلاف اپیل کی سماعت کررہے تھے،ملزمان حنیف، اعظم اور وقار کے وکیل نے عدالت کے روبرو موقف اختیار کیا کہ ٹرائل کورٹ نے حقائق کے برعکس اپیل کنندگان کو7 سال کی سزا سنائی،عیش محمد کے ساتھ جب حادثہ ہوا اس وقت ان کے موکل گاؤں میں موجود ہی نہیں تھے،متاثرہ بچہ عیش محمد عدالت میں پیش ہوا عیش محمد کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ان کے موکل جسم پر 60 سے زائد سوئے سے کئے گئے زخموں کے نشان موجود ہیں،عیش محمد کے آنکھوں میں سوئے مارے گئے جس سے اس کی بینائی چلی گئی، ملزمان نے عیش محمد مردہ سمجھ کر پھینک دیا،ملزمان کی اپیل خارج کی جائے،دوان سماعت جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی عیش محمد کی حالت دیکھ کر آنکھیں نم ہو گئیں،عدالت نے فریقین سے مزید دلائل طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت ایک ہفتے کے لئے ملتوی کر دی۔

آبدیدہ

مزید : صفحہ آخر