حکومت مختصر، طویل المدتی معاشی چیلنجز سے نٹنے کیلئے پرعزم: عمران خان 

      حکومت مختصر، طویل المدتی معاشی چیلنجز سے نٹنے کیلئے پرعزم: عمران خان 

  



اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیر اعظم عمران خان سے ورلڈ بینک کے صدر ڈیوڈ مالپس نے ملاقات کی، جس میں پاکستانی معیشت کے استحکام اور اس کیلئے اہم اصلاحات کی ضرورت پر تبادلہ خیال کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں ہونیوالی ملاقات میں ورلڈ بینک حکام اور حکومتی وفدجس میں مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ اور گورنرسٹیٹ بینک سمیت اعلی حکام شامل تھے نے شرکت کی۔ملاقات میں کاروبار اور روزگار کیلئے سازگار ماحول فراہم کرنے، عوام کو بہترین تعلیم، صحت اور ہنر کی فراہمی پر بھی بات چیت ہوئی۔عالمی بینک کے صدر ڈیوڈ مالپس نے ملاقات سے قبل کہا تھا میرا دورہ پاکستانی معیشت سمجھنے کا بہترین موقع ہے، ہم معیشت پر وزیر اعظم اور وزرائے اعلی کی ترجیحا ت جاننا چاہتے ہیں اور پاکستان کیساتھ کاروبار اور ملازمتوں کا ماحول بہتر بنانے پر تعاون کے خواہشمند ہیں۔بعدازاں ورلڈ بینک کے صدر ڈیوڈ میلپاس نے اسلام اباد میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب میں کہا پاکستان میں مختلف شعبوں میں ترقی کیلئے پرعزم جبکہ ٹیکس اصلاحات بھی بہت اہم ہیں، صوبائی اور وفاقی حکومت کا تعاون قابل تحسین، اصلاحات سے تاجر برادری کے اعتماد میں اضافہ ہوگا۔صدر ورلڈ بینک ڈیوڈ میل پاس نے کہا پاکستان میں کاروباری آسانی کی رینکنگ میں بہتری آئی۔ اصلاحات سے درمیانے اور چھوٹے درجے کے کاروبار میں بہتری آئے گی۔دوسری طرف  وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اشیائے ضروریہ کی قیمتوں اور مہنگائی پر قابو پانے کے حوالے سے اٹھائے جانیوالے اقدامات پر اجلاس ہوا،جس میں وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ گندم اور آٹے کی قیمتوں پر مسلسل نظر رکھی جائے، اس سلسلے میں صوبوں کے درمیان کوآرڈی نیشن کو مزید بہتر بنایا جائے، اشیائے ضروریہ کی ہول سیل اور پرچون قیمتوں میں خاطر خواہ فرق ناجائز منافع خوری اور ذخیرہ اندوری کی نشاندہی کرتا ہے،اس فرق کو کم کرنے کیلئے انتظامی سطح کے اقدامات کو مز ید موثر بنانے اور اشیاء ضروریہ کی قیمتوں کو قابو میں رکھنے کیلئے جہاں ان اشیا کی دستیابی کے حوالے سے جامع منصوبہ بندی کی جائے وہاں تمام ضروری انتظامی اقدامات موثر طریقے سے اٹھانے پر خصوصی توجہ دی جائے۔اجلاس میں وزیراعظم عمران خان کو اشیائے ضروریہ کی قیمتوں، خصوصاً گندم اور آٹے کی قیمتوں کو قابو میں رکھنے کیلئے کئے جانیوالے اقدامات اور ان کے نتائج پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ اجلاس میں اقتصادی رابطہ کمیٹی کی جانب سے پاسکو کے ذخائر سے صوبوں کو ساڑھے 6 لاکھ ٹن گندم ریلیز کرنے کے فیصلے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیااس اقدام سے ملک میں گندم اور آٹے کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے میں خاطر خواہ مدد ملے گی، حکومت کے حالیہ اقدامات کے نتائج برآمد ہونا شروع ہو گئے ہیں، اقتصادی رابطہ کمیٹی کے فیصلے سے مزید بہتری آئے گی۔ اجلاس کے دوران وزیر اعظم کو بتایا گیا اشیائے خوردونوش کی قیمتوں کو قابو میں رکھنے اور عوام تک ان اشیاء کی قیمتوں کے بارے میں معلومات کی فراہمی کیلئے ٹیکنالوجی کو برؤے کار لاتے ہوئے ایک مفصل نظام کا اطلاق وفاقی دارالحکومت میں شروع کر دیاگیا ہے، صوبوں کی مشاورت سے اس نظام کو دیگر بڑے شہروں میں رائج کرنے کیلئے بھی اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔دریں اثناء  وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں صنعت و حرفت کے فروغ خصوصا درآمدات پر ٹیرف کی شرح، موجودہ ٹیرف کے صنعت اور برآمدات پر اثرات اور ٹیرف کے نظام میں مزید بہتری لانے کے حوالے سے اقداما ت کے سلسلے میں اجلاس کا انعقاد ہوا، اجلاس میں ٹیرف کے موجودہ نظام اور اس میں بہتری لانے کیلئے اقدامات کا تفصیلی جائزہ لیا گیا اور ٹیرف کے نظام کو کاروباری طبقے کی ضروریا ت کے مطابق بنانے کا مفصل لائحہ عمل پیش کیا گیا،وزیرِ اعظم کا اجلاس سے خطاب میں کہنا تھاحکومت کاروباری برادری کو ہر ممکن سہولت فراہم کرنے کیلئے پر عزم ہے۔وزیرِ اعظم نے ٹیرف نظام کے حوالے سے تجاویز کا خیر مقدم کیااور کہا ان اقدامات کا مقصد جہاں کاروباری طبقے کی مشکلات دور کرنا اور ان کو آسانیاں فراہم کرنا ہے وہاں کاروباری طبقے کو ساز گار ماحول کی فراہمی ہے تاکہ پاکستان پراڈکٹس خطے میں دوسرے ممالک کا مقابلہ کر سکیں اور بین الاقوامی مارکیٹ میں اپنا حصہ حاصل کریں۔دریں اثنا سرمایہ کاری بورڈ کے زیر اہتمام تجارتی نمائش کیلئے منعقدہ تقریب سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے کہا حکومت کو مختصراورطویل المدتی معاشی چیلنجز کا سامنا ہے، تجارتی خسارے میں کمی کیلئے کوشش کررہے، ترقی کیلئے بڑا چیلنج نئی نسل کو جدید ٹیکنالوجی سے ہم آہنگ کرنا ہے، احساس پروگرام سے غربت کا خاتمہ کریں گے۔ چیف جسٹس پاکستان میں نظام انصاف میں بہتری کیلئے پرعزم ہیں۔ خواتین کو قومی دھارے میں لانے کی کوشش کررہے ہیں۔ نظام انصاف میں اصلاحات سے ملک میں سرمایہ کاری اور کاروبار کو بھی فروغ ملے گا۔ بہترین نظام انصاف نہ ہوتو سرمایہ کار اعتماد نہیں کرتے۔

 عمران خان

مزید : صفحہ اول