معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے آزادی مارچ کوناکام قراردیدیا

معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے آزادی مارچ کوناکام قراردیدیا
معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے آزادی مارچ کوناکام قراردیدیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاہے کہ ملین مارچ کا دعویٰ کرنے والی پانچ چھ جماعتیں مل کر چند ہزار لوگ لاسکیں ہیں اور ان کو ملین مارچ میں مکمل ناکامی ہوئی ہے ۔

جیونیوز کے نیوز کے پروگرام ”رپورٹ کارڈ“میں گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کا مسلسل یہ بات کرنا کہ میں کسی معاہدے کونہیں مانتا ، دو دن میں استعفیٰ دیدیں۔ انہوں نے کہا کہ ملین مارچ کا دعویٰ کرنے والی پانچ چھ جماعتیں مل کر چند ہزار لوگ لاسکیں ہیں اور ان کو ملین مارچ میں مکمل ناکامی ہوئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کے درد اور معیشت کی تباہ کاری کی جو داستان مولانا فضل الرحمان نے بیا ن کی ہے ، عوام اس کومانیں یا ورلڈ بینک کے صدر نے جو پاکستان کی معیشت کو درست سمت میں جانے کی بات کی ہے ۔ اس کو تسلیم کریں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے دنیامیں پاکستان اور اسلام کا مثبت چہرہ اجاگر کیاہے ، مولانافضل الرحمان اسلام کا من پسند ایجنڈا ہے کہ دھرنے میں خواتین نظر نہیں آناچاہئے جو پاکستان کی نصف آبادی ہے ۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان کی قومی سلامتی اور وقار کے سب سے بڑے علمبردار ہیں ۔ پاکستان کے 22کروڑ پاکستانیوں کا اس بات پر یقین ہے کہ کشمیر ہمارے وجود کاحصہ ہے اور پاکستان کیلئے لازم وملزوم ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب وزیر اعظم ہندوستان کا حقیقی چہرہ دنیا کودکھا رہے تھے تو اس وقت کشمیر کے بیا نیے سے ہٹ کر کسی اور ایجنڈے پر بات کرنا کشمیر ایشوکے لئے مناسب نہیں ہے ۔

مزید : قومی