کاروباری طبقہ کو ٹیکس میں ریلیف دیا جاعئے: صفدر علی بٹ

  کاروباری طبقہ کو ٹیکس میں ریلیف دیا جاعئے: صفدر علی بٹ

  

           لاہور(سٹی رپورٹر)کاروباری طبقہ کا خصوصی خیال رکھتے ہوئے ٹیکس شرح میں کمی کی جائے۔ موجود ہ کاروباری صورتحال میں حکومت کی طرف سے مقررہ کردہ ٹیکس اہداف سے عوام، کاروباری برادری پر دباؤ بڑھا دے گی کورونا زدہ معیشت مزید ٹیکسز کا بوجھ اٹھانے سے قاصر ہے اس لیے اس پر نظر ثانی کی جائے۔ان خیالات کا اظہار صدر لبرٹی مارکیٹس بورڈ صفدر علی بت نے تاجروں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ کورونا زدہ معیشت چھ ہزار ایک سو ارب کے ٹیکس کا بوجھ اٹھانے سے قاصر ہے جسے تسلیم کیا جائے اور آئندہ سال کے لیے ٹیکس اہداف پر نظر ثانی کی جائے۔صفدر علی بٹ نے کہا کہ بجٹ کو کاروباردوست بنانے کیلئے تجارتی، کاروباری تنظیموں کی تجاویز کو بجٹ میں شامل کیا جاناچاہئیے تاکہ اقتصادی ہدف کو ممکن بنایا جاسکے۔تاجر برادری معیشت کی ریڑھ کی ہڈی کی مانند ہیں اور وہ پہلے ہی مشکل اور نامساعد حالات میں معاشی ترقی میں اپنا کردار ادا کر رہے ہیں۔کورونا وباء کے تناظر میں عوام اور کاروباری برادری اتنا ٹیکس ادا کرنے کے قابل نہیں ہے آئندہ سال کا ٹیکس ہدف سے تاجروں پر دباؤ بڑھے گا اور ملک میں پہلے سے بڑھتی ہوئی ہوشربا مہنگائی میں مزید اضافہ سے غریب اور سفید پوش طبقہ کی قوت خرید میں کمی ہوگی۔ٹیکسز کے اہداف بڑھنے سے ٹیکس نہ دینے کے رجحان میں اضافہ ہوگا ا۔ایک طرف تو ملک میں ٹیکس ادا نہ کرنے والے کاروبار کی بھر مار ہے جبکہ دوسری طرف انڈر رپورٹننگ کا چلن بھی عام ہے۔ 

مزید :

کامرس -