ایک اور ایوی ایشن کمپنی کا لائسنس کی تجدید نہ کرنے پر آپریشنز بند کرنیکا عندیہ 

ایک اور ایوی ایشن کمپنی کا لائسنس کی تجدید نہ کرنے پر آپریشنز بند کرنیکا ...

  

        لاہور(این این آئی)پاکستان کی ایک اور ایوی ایشن کمپنی نے لائسنس کی تجدید نہ کرنے پر آپریشنز بند کرنے کا عندیہ دیدیاجبکہ سول ایوی ایشن اتھارٹی نے کہا ہے کہ کمپنی متعلقہ ایجنسیوں سے سکیورٹی کلیئرنس حاصل کرنے میں ناکام رہی،اسکائی ونگ اپنی تازہ ترین مالی پوزیشن کا کوئی قابل اعتبار ثبوت فراہم کرنے میں بھی ناکام رہی ہے۔ڈائریکٹرسکائی ونگزایوی ایشن کی جانب سے وزیراعظم عمران خان اور چیف جسٹس پاکستان گلزار احمد اور سول ایوی ایشن اتھارٹی کولکھے گئے خط میں بیان کیا گیا کہ لائسنس کی تجدید نہ ہوئی تو 16 نومبر سے کاروباروآپریشن بند کردیں گے،سی اے اے نے سکائی ونگ ایوی ایشن کے سالانہ لائسنس کی تجدیدروک دی۔خط کے متن میں تحریر کیا گیا کہ ایریل ورکس لائسنس حصول کے لئے2سال سے درخواست کے باوجودنہیں دیاگیا،سی اے اے کے باعث کئی ایوی ایشن کمپنیز اور ایئرلائنزبند ہوگئی ہیں۔جبکہ سول ایوی ایشن اتھارٹی کے ترجمان سیف اللہ خان نے کہا ہے کہ لائسنس جاری کرنے میں تاخیر نہیں ہوئی،اسکائی ونگ کو لائسنس کے لیے درخواست دئیے ہوئے دو سال سے بھی کم کا عرصہ ہوا ہے،اسکائی ونگ کی درخواست پر فوری کارروائی کرکے اسے متعلقہ حکام کو بھیج دیا لیکن کمپنی متعلقہ ایجنسیوں سے سکیورٹی کلیئرنس حاصل کرنے میں ناکام رہی ہے۔ اسکائی ونگ اپنی تازہ ترین مالی پوزیشن کا کوئی قابل اعتبار ثبوت فراہم کرنے میں بھی ناکام رہی ہے،اسکائی ونگ کو ایک ہفتہ پہلے ایک میٹنگ میں بتایا گیا تھا کہ آپ کی کمپنی کی مالیاتی رپورٹ میں سنگین تضادات ہیں،اسکائی ونگ کمپنی کوخود مختار آڈیٹر کی رپورٹ کی تصدیق کے ساتھ درست ریکارڈ فراہم کرنے کا کہا گیا تھا،اسکائی ونگ کمپنی نے اپنی مالی حیثیت کا پرانا مالیاتی ریکارڈ پیش کیا جس کی ضرورت نہیں تھی، لائسنس میں تاخیر کی ذمہ دار اسکائی ونگ کمپنی خود ہے نہ کہ سی اے اے ہے۔

ایوی ایشن

مزید :

صفحہ آخر -