جمرود، قبائیلی اضلاع کے عوام نے انضمام بالجبر کو مسترد کر دیا 

  جمرود، قبائیلی اضلاع کے عوام نے انضمام بالجبر کو مسترد کر دیا 

  

       جمرود(نمائندہ خصوصی) جمرود،قبائیلی علاقوں میں انضمام کے خلاف واکمنہ قبائلی جرگہ کا دورہ مکمل قبائیلی اضلاع کے عوام نے  انضمام بالجبر کو مسترد کردیا دوسرے مرحلے میں فاٹا بھر میں احتجاجی مظاہروں کا اعلان مفتی عبدالشکور بیٹنی اس سلسلے میں جمرود پریس کلب میں ہنگامی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جے یو آئی ف فاٹا کے امیر و ایم این اے مفتی عبدالشکور بیٹنی،سابق وفاقی واکمنہ قبائلی جرگہ کے چئیر مین وزیر حمید اللہ جان،مفتی اعجاز شینواری،مولانا غفران اللہ خیبری،ملک وزیر شیر خان خیل،قاری جہاد شاہ افریدی،سید کبیر افریدی،مولانا درویش،مولانا نور الامین حقانی،مولانا نور مراز،ملک خان افضل مندوخیل،و دیگر نے کہا ہے کہ جے یو آئی کے زیر اہتمام واکمنہ جرگہ کے ممبرانِ نے قبائلی اضلاع کے کامیاب دورہ کرکے ہر ضلع میں انضمام کے خلاف جرگے منعقد ہوئے جس میں قبائیلی مشران،نوجوانان سمیت مختلف ماکتب فکر کے لوگوں نے شرکت کرکے انضمام بالجبر قرار دے کر یکسر مسترد کردیا۔انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں میں اصلاحات کے نام پر دھوکا کرکے یہاں کے عوام سے رائے لیے بغیر انضمام کردیا۔انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں کے عوام کے رائے کے بغیر کوئی فیصلہ ہمیں قبول نہیں کیوں کہ فاٹا انضمام کے حوالے سے سب سے پہلے تحریک جے یو آئی نے 2012 میں شروع کیں تھے اور اس وقت تمام ایجنسیوں کے دورے کیں تھے۔انہوں نے کہا کہ قبائلی واکمنہ جرگہ نے پہلے مرحلے میں آگاہی جرگے منعقد کیں جو کل وزیرستان میں مکمل ہوئے اب دوسرے مرحلے میں واکمنہ قبائلی جرگہ فیصلہ کریں گے کہ پورے قبائیلی علاقوں میں احتجاجی مظاہرے کرکے بڑے بڑے شاہراہوں کو بند کردیں گے اور تیسری مرحلے میں پارلیمنٹ ہاوس،صوبائی اسمبلیوں اور عدالت کے سامنے احتجاجی دھرنے دے گے۔انہوں نے کہا کہ 1973 آئین کے مطابق قبائیلی اضلاع کے عوام کے رائے کے بغیر پارلیمنٹ یا دوسرے ادارے ضم نہیں کرسکتے اور یہ واعدہ بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح نے بھی کیا تھا کہ فاٹا کے عوام کے رائے لیے بغیر کوئی فیصلہ نہیں کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ جے یو آئی قبائیلی اضلاع میں بلدیاتی انتخابات میں بھرپور حصہ لے گی اور مقامی حکومتوں میں فاٹا انضمام کے خلاف تحریک جاری رکھے گے۔ایک سوال کے جواب میں کہا کہ کہ جے یو آئی کے زیر اہتمام جاری تحریکِ قبائیلی واکمنہ  جرگہ ہے جو انضمام کے خلاف تمام قوتیں شامل ہیں بعض افراد کی طرف سے قبائلی واکمنہ جرگہ کی مخالفت درست نہیں ہم ان تمام تحریک کی حمایت کرتے ہیں جو انضمام کے خلاف ہیں اور ان کے مشران کی قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -