عوام کو بیک وقت ڈینگی اور کرونا دونوں کا سامنا ہے: جنید لاکھانی

عوام کو بیک وقت ڈینگی اور کرونا دونوں کا سامنا ہے: جنید لاکھانی

  

        کراچی(اسٹاف رپورٹر)معروف سماجی رہنما و ماہر تعلیم حنید لاکھانی نے ڈینگی کے مریضوں کی تعدا د میں اضافے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ میں ڈینگی وائرس کا اسپرے بہت ضروری ہوگیا ہے ڈینگی نے سندھ بھر میں سینکڑوں جانیں لے لی ہیں ڈینگی مچھر سے بچاؤ کے لیئے ضروری ہے کہ تمام حفاظتی اقدامات کیے جائیں عوام کو بیک وقت ڈینگی اور کرونا دونوں کا سامنا ہے ڈینگی مچھر کو مارنے کے لیئے مختلف مقامات پر مچھر مار اسپرے کیا جائے، ان خیالات کا اظہارا نہوں نے حنید لاکھانی سیکرٹریٹ سے جاری کردہ بیان میں کیا، حنید لاکھانی نے کہا کہ ڈینگی ایک جان لیوا بیماری ہے اور اس کی بروقت تشخیص نہ ہونے سے مریض کی جان جانے کا بھی خطرہ ہوتا ہے ڈینگی وائرس خون کے سفید خلیات پر حملہ کرتا ہے اور انہیں آہستہ آہستہ ناکارہ کرنے لگتا ہے ڈینگی کے مرض میں مبتلا مریض کے پٹھوں اور جوڑوں میں شدید دردہوتا ہے اور اس کے علاوہ ڈینگی وائرس متاثرہ مریض کی کمر اور ٹانگوں کو بھی شدید متاثر کرتا ہے انہوں نے کہا کہ اگر بروقت ڈینگی کا علاج نہ کیا جائے تو یہ انسانی جسم میں خون کے سفید خلیوں کو ختم کردیتا ہے اور کچھ ہی دنوں میں مریض کی موت واقع ہونے کا خدشہ ہوتا ہے ڈینگی وائرس سے بچاؤ اور ڈینگی ہوجانے کی صورت میں کیے جانے والے اقدامات کے حوالے سے آگاہی مہم وقت کی ضرورت بن چکی ہے کسی بھی انسان کو اگر دودن تک بخار رہتا ہے تو وہ فوری طور پر ڈینگی کا ٹیسٹ کروائے اور اگر ڈینگی کاٹیسٹ پازیٹو آتا ہے تو ہنگامی بنیادوں پر قریبی ہسپتال میں ایڈمٹ ہوجائے تا کہ اس کو طبی امداد فراہم کی جائے ڈینگی کے مریضوں کو پانی زیادہ سے زیادہ پینا چاہئے، انہوں نے کہا کہ سندھ بھر میں ڈینگی کیسز کی تعداد 1600سے تجاوز کر چکی ہے اور اگر اس کے روک تھام کے لیئے موثر اقدامات نہ کیے گئے تو زیادہ نقصان ہونے کا خدشہ ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -