ٹرمپ کی پالیسی ’’سٹریٹجک کی تبدیلی ‘‘ کا تسلسل ہے ، فرحت اللہ بابر

ٹرمپ کی پالیسی ’’سٹریٹجک کی تبدیلی ‘‘ کا تسلسل ہے ، فرحت اللہ بابر
 ٹرمپ کی پالیسی ’’سٹریٹجک کی تبدیلی ‘‘ کا تسلسل ہے ، فرحت اللہ بابر

  


 اسلام آباد (این این آئی)پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما سینیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا ہے کہ عالمی برادری کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں کے بارے میں آگاہ کرنا احسن اقدام ہے ۔وہ قائداعظم یونیورسٹی کے ایریا سٹڈی سینٹر برائے افریقہ، شمالی و جنوبی امریکہ کے زیر اہتمام منعقدہ سیمینار سے خطاب کررہے تھے سیمینار کا موضوع افغانستان اور جنوبی ایشیاء کیلئے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی پالیسی تھا۔ سیمینار سے سینیٹر فرحت اللہ بابر، سینیٹر افراسیاب خٹک، خالد محمود اور ڈاکٹر شاہین اختر نے خطاب کیا۔ مقررین نے افغانستان اور جنوبی ایشیاء کیلئے صدر ٹرمپ کی پالیسی کے مختلف پہلوؤں کا جائزہ لیا۔ سینیٹر فرحت اللہ بابر نے اپنے خطاب میں کہا کہ بھارت اور امریکہ کے درمیان سٹریٹجک تعلقات کی طویل تاریخ رہی ہے تاہم صدر بل کلنٹن کے وقت میں جنوبی ایشیاء کیلئے امریکی پالیسی میں بڑی سٹریٹجک تبدیلی آئی۔ فرحت اللہ بابر کا موقف تھا کہ صدر ٹرمپ کی پالیسی ’’سٹریٹجک تبدیلی‘‘ کا ہی تسلسل ہے۔ انہوں نے اپنے معاملات کو درست رکھنے کے وزیر خارجہ کے بیان کی حمایت کی اور کہا کہ عالمی برادری کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں کے بارے میں آگاہ کرنا احسن اقدام ہے تاہم اس امر کی بھی ضرورت ہے کہ اس حوالہ سے اندرون ملک بھی اتفاق رائے کے حصول کیلئے کام کیا جائے۔ فرحت اللہ بابر نے کالعدم تنظیموں اور افغانستان کے حوالہ سے پالیسی کے جائزہ کی تجویز بھی پیش کی۔ آئی ایس ایس آئی کے چیئرمین خالد محمود نے افغانستان اور جنوبی ایشیاء کیلئے امریکی پالیسی پر چین کے تناظر میں روشنی ڈالی۔

فرحت اللہ بابر

مزید : صفحہ اول