نویں جماعت کے طٍالب علم نے فارغ اوقات میں کھیل کود کے بجائے اپنے باپ کی دکان پر ہاتھ بٹا نا شروع کردیا

نویں جماعت کے طٍالب علم نے فارغ اوقات میں کھیل کود کے بجائے اپنے باپ کی دکان ...
نویں جماعت کے طٍالب علم نے فارغ اوقات میں کھیل کود کے بجائے اپنے باپ کی دکان پر ہاتھ بٹا نا شروع کردیا

  


لاہور (ویب ڈیسک )وارث روڈ مزنگ بازار میں نویں کلاس کا طالب علم محمد احمد کھیل کود کی بجائے فارغ اوقات میں اپنے باپ کی سبزی فروٹ کی دکان پر ہاتھ بٹاتا ہے۔

اس کا کہنا ہے کہ اس کا باپ صبح سویرے منڈی سے سامان لا کر سجاتا ہے اور ایک خاص ٹائم تک وہ وہاں دکانداری کرتا ہے۔ سکول سے چھٹی کے بعد کچھ وقت کے لیے یہ اپنے باپ کے آرام کی خاطر یہ دکان پر کام کرتا ہے تاکہ اس کو بھی اس کا کا تحربہ ہو سکے۔

ایف اے کرنے کے بعد اس کا ارادہ یہی کام کرنے کا ہے کیونکہ نوکری عام طور پر ملنا دشوار اور مناسب پیسے بھی نہیں ملتے۔ اپنا کام دل لگی اور لگن محنت سے کیا جائے تو نوکری سے بہتر پیسے کمائے جا سکتے ہیں۔ اچھی تعلیم کے بعد کوئی بھی کام کاروبار کیا جائے بہت برکت کا سبب بنتا ہے۔

مزید : لاہور