ایپکا کی اپیل پر سرکاری ملازمین کے پنجاب بھر میں مظاہرے

  ایپکا کی اپیل پر سرکاری ملازمین کے پنجاب بھر میں مظاہرے

  

 لاہور(خبر نگار) صوبائی دارالحکومت سمیت پنجاب بھر میں سرکاری ملازمین اپنے مطالبات کے حق میں گزشتہ روز سڑکوں،چوراہوں اور اہم مقامات پر سراپا احتجاج بنے رہے۔لاہور میں سرکاری ملازمین نے دفاتر میں مکمل ہڑتال کی اور ایپکا کے مرکزی صدر حاجی محمد ارشاد چودھری کی کال پر کے ملازمین نے متعدد مقامات پر احتجاجی مظاہرے کئے اور اپنے مطالبات کے حق میں دھرنے دیئے۔گزشتہ روز سرکاری ملازمین صبح سویرے ہی سڑکوں پر نکل آئے اس موقع پر سرکاری ملازمین نے ایپکا کے مرکزی صدر حاجی محمد ارشاد چودھری کی قیادت میں سب سے بڑا احتجاجی مظاہرہ کینال روڈ پر ٹھوکر نیاز بیگ کے سامنے کیا گیا۔احتجاجی مظاہرے اور سرکاری ملازمین کے دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے ایپکا کے مرکزی صدر حاجی محمد ارشاد چودھری نے کہا کہ حکومت نے سرکاری ملازمین کے چارٹر آف ڈیمانڈ پر عمل درآمد نہ کیا تو احتجاجی تحریک کا دائرہ کار وسیع کر دیا جائے گا اور پارلیمنٹ ہاؤس کا گھیراؤ کیا جائے گا

۔انہوں نے کہا کہ گونگے بہرے اور پرامن احتجاج کو اہمیت نہ دینے والے حکمرانوں اور امتیازی طور پر مراعات یافتہ بیوروکریسی  کے ملازمین دشمن رویہ کی شدید مزمت  کرتے ہیں۔ اس موقع پر ملازمین نے شدید گرمی میں اپنے مطالبات کے حق میں نعرے بازی کی۔دوسری جانب حاجی محمد ارشاد چوہدری مرکزی صدر ایپکا پاکستان کی کال پر گزشتہ روز  پنجاب کے 36 اضلاع  میں ملک بھر بشمول آزاد کشمیر کی طرح ہر ضلع میں احتجاجی مظاہرے اور دھرنے دیئے گئے۔لاہور میں متعدد مقامات  جن میں ٹھوکر چوک،ساندہ روڈ،ڈیوس روڈ،وحدت روڈ،قذافی اسٹیڈیم، برکت مارکیٹ ،فرید کورٹ ہاؤس  احتجاجی مظاہرے کیے گئے جبکہ مرکزی مظاہریاور ریلی  مین کینال روڈ ٹھوکر چوک میں کئی گھنٹے ٹریفک کا نظام درہم برہم رہا ہے۔ اس موقع پر احتجاجی مظاہرہ اور دھرنوں سے ایپکا کے مرکزی صدر حاجی محمد ارشاد چوہدری کے علاوہ ایپکا کے مرکزی و صوبائی رہنماؤں ذوالفقارعلی بھٹی،میاں شوکت علی،حافظ فیاض،ارشاد اختر نکالی گء  جبکہ دوسری ریلی علامہ اقبال میڈیکل کالج /جناح ہسپتال  میں زیر قیادت ایپکا کے مرکزی رہنما لالہ محمد اسلم،ذاہد کمبوہ،بشیر گجر،محمد اکبرنکالی گء۔ اپنے خطاب میں حاجی محمد ارشاد چوہدری نے کہا بجٹ پیش کرنے کے وقت خذانہ خالی اور بعد میں بااختیار محکمہ جات کے ملازمین پر 150فیصد  تنخواہ میں اضافہ اور یوٹیلٹی الاؤنس جیسی نوازشات کرنے والی آئی ایم ایف زدہ حکومت کا ایپکا کے پرامن احتجاج کی پرواہ نہ کرنا وزیراعظم عمران خاں کے اپنے ویڑن کی صریحا نفی ہے. مطالبات کی منظوری، یکسانیت  قائیم کرنے اور نجکاری کے خاتمہ تک احتجاج جاری رکھنے اور دائرہ احتجاج مزید وسیع کرنے کا اعلان  کیا گیا ہے۔حاجی محمد ارشاد چوہدری مرکزی صدر ایپکا پاکستان نے مزید کہا کہ اگلے مرحلے میں پنجاب اسمبلی کے سامنے احتجاجی مظاہرہ۔دوسرے مرحلے میں وزیر اعلیٰ پنجاب کے دفتر سیون کلب احتجاجی مظاہرہ کیا جائے گا اور اخری مرحلے میں پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے ڈے اینڈ نائٹ احتجاجی مظاہرے اور دھرنے کا اعلان کیا جائے گا۔جس کیلئے لاھور سمیت پنجاب بھر اور ملک کے دیگر حصوں میں سرکاری دفاتر میں مکمل ہڑتال کی کال دی جائے گی۔اور مطالبات کی منظوری تک احتجاجی تحریک کا سلسلہ ختم نہیں کیا جائے گا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -