طب یونانی قومی ورثہ،اس کی حفاظت بہت ضروری ہے،حکیم اجمل ثانی

  طب یونانی قومی ورثہ،اس کی حفاظت بہت ضروری ہے،حکیم اجمل ثانی

  

لاہور(پ ر)طب یونانی قومی ورثہ ہے اس کی حفاظت کی جانی چاہیے طب و اطباء کی ترقی کے لئے کوئی دقیقہ فرو گزاشت نہیں کیا جائے گا۔اجمل اعظم کے مشن کو آگے بڑھایا جائے گا۔پاکستان طبی کانفرنس طب یونانی کی بقاء کی خاطر جدوجہد کر رہی ہے۔ان خیالات کا اظہار دواخانہ حکیم اجمل خان کے اسسٹنٹ ڈائریکٹرحکیم محمد اجمل ثانی نے پاکستان طبی کانفرنس کے ایک وفد سے ملاقات کے دوران کیا  وفد نے اجمل یونانی لیبارٹریز میں دواؤں کی تیاری کے مختلف شعبہ جات دیکھے۔حکیم محمد احمد سلیمی نے کہا کہ برِصغیر میں طب یونانی کی بقاء کا سہرا حکیم محمد اجمل خان اور طبی کانفرنس کے سر ہے مسیح الملک نے طب یونانی کو سائنسی بنیادوں پر استوار کیا۔دواخانہ حکیم اجمل خان نے طبی دواسازی کے میدان میں جو تحقیق کی ہے اس سے صرفِ نظَر نہیں کیا جا سکتا اجمل کی بہت سی دوائیں اپنے معیار اور تاثیر کے حوالے سے اہمیت رکھتی ہیں پاکستان طبی کانفرنس گوجرانوالہ ڈویژن کے رہنماء حکیم قیصر نوید گھمن نے کہا کہ برِصغیر میں ہر طبیب کی عزت اجمل اعظم کے احسانات کی مرہون منت ہے۔

 اور اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جا سکتا کہ طب یونانی آج بھی خاندان اجمل کی محتاج ہے۔اجمل اعظم نے ذاتی نمود و نمائش کی بجائے طب و اطباء کے وقار کو ترجیح دی۔ حکیم ضیاء اللہ فتح گڑھی نے کہا کہ یہ بات اعزاز سے کم نہیں کہ ہم اجمل اعظم کی یادگار طبی کانفرنس کا حصہ ہیں۔۔۔۔وفد میں حکیم ضیاء اللہ فتح گڑھی،حکیم قیصر نوید گھمن،حکیم زاھد ہاشمی، حکیم عبد العظیم اثری، حکیم منظور احمد حجازی، حکیم ناصر بشیر سوہدروی، حکیم امجد وحید بھٹی،حکیم محمد جمیل عاصی، حکیم آقا بیدار بخت، حکیم ضمیر حیدر،  حکیم ریاض شاہد،  حکیم سید افتخار حسین، شاہ حکیم اکرام الحق بھٹہ، حکیم ملک روف اعوان، حکیم عرفان، حکیم رضوان، حکیم شوکت حکیم عمران،  حکیم عدنان، حکیم ادریس چو ہان، حکیم پیر محمد افضال، حکیم سیّد صبیح الرحمٰن،  حکیم تصور محمدی،حکیم محمد افضل میو  اور  حکیم شہباز چشتی شامل تھے وفد میں شامل گجرات، سوہدرہ، گوجرانوالہ اور دیگر نواحی شہروں سے اطِباء نے حکیم محمد اجمل ثانی کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے بہت سا وقت دیا۔یاد رہے کہ دواخانہ حکیم اجمل خان کی بنیاد اجمل اعظم کے پوتے جناب حکیم محمد نبی خان جمالِ سویدا نے رکھی تھی جو طبی کانفرنس کے صدر بھی تھے، ان کے صاحب زادے معروف سائنس دان میاں منیر نبی خان پاکستان طبی کانفرنس کی طرف سے نیشنل کونسل فار طب کے منتخب صدر رہ چکے ہیں، دوسرے صاحب زادے جناب حکیم مشیر نبی خان اور ان کے بیٹے  حکیم محمد اجمل ثانی اجمل لیبارٹریز کی نگرانی کے ساتھ ساتھ علاج معالجے کی سہولیات بھی فراہم کر رہے ہیں۔دواخانہ حکیم اجمل خان کی جانب سے وفد کے لئے پرتکلف کھانے کا بھی اہتمام کیا گیا تھا۔ حکیم محمد اجمل ثانی نے وفد کو خود رخصت کیا اور اجمل لیبارٹریز کی جانب سے خصوصی تحائف دئیے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -