کچہری کے ججز ذہن میں رکھیں ان کافیصلہ حتمی اورآخری ہے،چیف جسٹس

کچہری کے ججز ذہن میں رکھیں ان کافیصلہ حتمی اورآخری ہے،چیف جسٹس

  

کوئٹہ (آن لائن)چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس گلزار احمد نے کہاہے کہ کچہری کے ججز فیصلے دیتے وقت ذہن میں رکھیں کہ یہ فیصلہ حتمی اور آخری ہے اس کے بعد کوئی عدالت نہیں کیونکہ اکثر کیسز چھوٹی عدالتوں سے فیصلے آنے پر ختم ہوجاتے ہیں بہت کم کیسز عدالت عالیہ اور عدالت عظمی تک جاتے ہیں،نوجوان وکلاء عدالتوں میں پیش ہونے سے قبل مکمل تیاری اور قانون،فلسفہ اور لٹریچرکے کتابوں کامطالعہ کیا کریں تاکہ انہیں قانونی مسائل جاننے میں آسانی ہو۔ بلوچستان بار کونسل کے زیر اہتمام تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ میرا کچہری سے باقی وکلاجیسا تعلق ہے،نوجوان وکلاتندہی سے اپنی پریکٹس جاری رکھنے کے ساتھ قانون سے آگاہی حاصل کرنے کے لئے اپنے علم میں توسیع کرتے رہیں۔ وکلاعدالتوں میں پیش ہونے سے قبل پوری تیاری کرکے آئیں اور ریفرنس کی کتابیں بھی ساتھ لے جایا کریں تاکہ کیسز کا فیصلہ جلد ممکن ہو۔ جوڈیشل اکیڈمی میں بلوچستان کے نوجوان وکلاکے ٹریننگ کا سلسلہ جاری رہے گا اور اس ضمن میں متعلقہ حکام کو ضروری ہدایات جلد جاری کروں گا۔ اس موقع پر چیف جسٹس بلوچستان ہائی کورٹ جسٹس جمال مندوخیل نے کہاکہ 1988ء میں نے پریکٹس شروع کرتے وقت ہی محسوس کیا تھا کہ ضلعی کچہری کی عمارت کو بہتر کرنے کی ضرورت ہے۔ تذئین و آرائش کے بعد ضلعی کچہری تاریخی عمارت کی شکل اختیار کرگئی ہے۔ انصاف دینے کے لئے ماحول اور سہولیات کا ہونا بھی ضروری ہے۔

چیف جسٹس

مزید :

صفحہ اول -