راجن پور: گاڑیاں سمگل کرنیکا الزام‘ 3 پولیس ملازمین معطل‘ تحقیقات شروع

 راجن پور: گاڑیاں سمگل کرنیکا الزام‘ 3 پولیس ملازمین معطل‘ تحقیقات شروع

  

 جام پور (نامہ نگار) کانسٹیبل سے تھانیدار کی وردیاں پہن کرکے وارداتیں کرنے اور بلوچستان سے بی ایم پی چوکی کھان سے نان کسٹم گاڑیوں کی سمگلنگ میں ملوث معطل تین پولیس ملازمین کی انکوائری ڈی ایس پی ہیڈکوارٹر کے سپرد کردی گئی۔ ڈی ایس پی نے آج اکتوبر کو دونوں فریقین کو طلب کر لیا۔ پولیس ملازمین کی طرف سے کی گئی فائرنگ سے زخمی ہو نے والے (بقیہ نمبر33صفحہ 6پر)

مقامی ذمیندار عبدالغنی کھوسہ نے ڈی  پی او راجن پور کو ملوث پولیس ملازمین کی جائیدادیں۔ روزانہ کی بنیاد پر بیس سے زاہد گاڑیوں کی سمگلنگ ودیگر شوائد پیش کر دئیے۔ تفصیل کے مطابق جام پور کے تھانوں میں تعنیات کانسٹیبل تیمور خان ملنہاس۔ یعقوب  ملنہاس۔ تیمور خان ملنہاس اور دیگر نے رات کے وقت تھانیدار اور ایس ایچ او کی وردیاں پہن کرکے بلوچستان سے نان کسٹم پیڈ گاڑیاں چوکی کھاون کے انچارج عباس ہتوانی کی ملی بھگت سے براستہ وہابی پل جام پور۔ راجن پور۔ ڈیرہ۔ ملتان گاڑیاں سگلنگ کراتے تھے۔ کئی عرصہ سے کاروبار جاری تھی گزشتہ ہفتہ کو کانسٹیبل تیمورجو کہ تھانہ صدر جا م پور میں ڈرائیور تعنیات تھا رات کے وقت داجل سے ملحقہ علاقے وہابی والی پل پر تھانیدار کی وردی پہن کر گاڑیاں سمگلنگ کررہا تھا کہ مقامی ذمیندار نے پکڑ لیا۔ مذکورہ ملازم جو کہ گاڑی چلارہا تھا بھگانے کی کوشش کرتے ہوئے زمیندارپر اپنے دوستوں یعقوب۔ جاوید ملنہاس کی مدد سے فائرنگ کرکے زخمی کر دیا۔ مقامی زمیندار نے ایک گاڑی پکڑلی جبکہ باقی دس گاڑیاں  تھانیداروں کی وردی میں ملبوس پولیس ملازمین  بھگا لے جانے میں کامیاب ہو گئے۔ ڈی پی او راجن پور نے موقع پر پہنچ کرکے تینوں ملازمین کو معطل کر دیا ہے۔ گزشتہ روز ڈی ایس پی ہیڈکوارٹر راجن پور پرویز احمد احمدانی نے متاثرہ دونوں فریقین کو طلب کرلے بیانات لیے۔ جس میں مقامی ذمیندار نے پولیس ملازمین پر گاڑیاں سمگلنگ کے مکمل ثبوت پیش کیے۔ڈی ایس پی نے مزید معاملہ کی انکوری کے لیے کل مورخہ یکم کو دونوں فریقین کو دوبارہ طلب کر لیا ہے۔ ملوث ملازمین نے مدعی مقدمہ سے صلح کے لیے مقامی زمینداروں۔ اہل علاقہ۔ کے علاوہ قران مجید اٹھا کرکے گھر کے چکر لگا نے لگے۔ اور معاملہ کو ختم کرنے کے لیے ہر ممکن کوشش شروع کر دی۔ دوسری طرف مقدمہ کے مدعی نے تمام ملازمین کو منطقی انجام تک پہنچانے کا فیصلہ کر لیا۔ مبینہ اطلاعات کے مطابق پولیس بھی ملازمین کو بچانے کے لیے حربے استعمال کرنا شروع کر دیے۔ سوموار کو ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی عدالت میں رٹ دائر ہونے کا بھی امکان ہے۔

گاڑیاں سمگل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -