سلک بینک کا قبل از محصول منافع 4.1 بلین روپے ہوگیا

  سلک بینک کا قبل از محصول منافع 4.1 بلین روپے ہوگیا

  

کراچی (پ ر)سلک بینک لمیٹڈ کے بورڈ آف ڈائیریکٹرز نے سال 2020 کی دوسری سہ ماہی کے حوالے سے 4.1 بلین روپے کے قبل از محصول منافع کا اعلان کردیا۔COVID-19 کے باعث ہونے والی کاروباری بندش سے پیدا ہونے والے معاشی بحران کے باوجود، بینک کی جانب سے منافع جات، ترقی اور بہتر نگہداشت کے لیے از سر نو کی جانے والی حکمت عملی کی وجہ سے بینک کی مستحکم کارکردگی کا تسلسل برقرار ہے۔بینک نے 30 جون،2020 کو ختم ہونے والی پہلی ششماہی کے حوالے سے 3.2 بلین روپے کے قبل از محصول ٹیکس کا بھی اعلان کیا جو سال 2019 کی پہلی ششماہی کے مقابلے میں 2.9 بلین روپے بہتر ہے۔ اخراجات سال بہ سال (YoY)، 7% تک کم ہوئے اور بینک نے محتاط طریقے سے غیر مستحکم اکاؤنٹس کی فراہمی کا عمل جاری رکھا۔کسٹمر کا اعتمادکو حاصل کرتے ہوئے اس بڑھوتری /نمو کی قیادت کریڈٹ کارڈز اور پرسنل لونز پراڈکٹس کے حامل کنزیومر ڈویژن نے کی اور گزشتہ سال کے اسی دورانیہ کے مقابلے میں 12%زیادہ قبل از محصول منافع کا اندراج کیا۔ڈپازٹس میں 30 جون،2019 کے دوران 8.4 بلین روپے تک کا اضافہ ہوا؛ اور بینک کی حکمت عملی کے تحت مجموعی قرضہ جات، دسمبر2019 کے 112 بلین روپے سے کم کرکے 30 جون،2020 کو 108 بلین روپے کردیئے گئے۔مسٹری شاپنگ کے ذریعے اطمینان و تسلی کی سطحوں میں اضافہ ظاہر ہوا جو سال 2019 کے 85% سے بڑھ کرسال 2020 کی پہلی ششماہی میں 91% ہوگیا۔

مزید :

صفحہ آخر -