وقت خوش خوش کاٹنے کا مشورہ دیتے ہوئے  | ریاض مجید |

وقت خوش خوش کاٹنے کا مشورہ دیتے ہوئے  | ریاض مجید |
وقت خوش خوش کاٹنے کا مشورہ دیتے ہوئے  | ریاض مجید |

  

وقت خوش خوش کاٹنے کا مشورہ دیتے ہوئے 

رو پڑا وہ آپ مجھ کو حوصلہ دیتے ہوئے 

خواب بے تعبیر سی سوچیں مرے کس کام کی 

سوچتا اتنا تو وہ دستِ عطا دیتے ہوئے 

بے زبانی بخش دی خود احتسابی نے مجھے 

ہونٹ سل جاتے ہیں دنیا کو گلہ دیتے ہوئے 

اپنی رہ مسدود کر دے گا یہی بڑھتا ہجوم 

یہ نہ سوچا ہر کسی کو راستہ دیتے ہوئے 

آپ اپنے قتل میں شامل تھا میں مقتولِ شوق 

یہ کھلا مجھ پر طلب کا خوں بہا دیتے ہوئے 

وہ ہمیں جب تک نظر آتا رہا تکتے رہے 

گیلی آنکھوں اکھڑے لفظوں سے دعا دیتے ہوئے 

جانے کس دہشت کا سایہ اس کو مہرِ لب ہوا 

ڈر رہا ہے وہ مجھے کھل کر صدا دیتے ہوئے 

بے اماں تھا آپ لیکن معجزہ ہے یہ ریاضؔ 

ہالۂ شفقت تھا اس کو آسرا دیتے ہوئے 

شاعر:ریاض مجید

(شعری مجموعہ: ڈوبتے بدن کا ہاتھ)

Waqt   Khush   Khush   Kaatnay   Ka   Maswara   Detay   Huay

Ro    Parra   Wo   Aap   Mujh   Ko   Haosla   Detay   Huay

Khaab-e-Be   Tabeer   Si    Sochen   Miray   Kiss   Kaam   Ki

Sochta   Itna   To   Wo    Dast-e-Ataa    Detay   Huay

Be   Zubaani   Bakhsh  Di   Khud    Ehatsaabi   Nay   Mujhay

Hont    Sil   Jaatay   Hen   Dunya   Ko   Gilaa    Detay   Huay

Apni   Reh   Masdood   Kar   Day   Ga   Yahi   Barrhta   Hujoom

Yeh   Na    Socha    Har    Kisi   Ko     Raasta  Detay   Huay

Aap   Apnay    Qatl   Men   Shaamil   Tha    Main   Maqtool -e-Shaoq

Yeh   Khula   Mujh   Par   Talab   Ka   Khoon    Bahaa    Detay   Huay

Wo   Hamen   Jab   Tak    Nazar    Aata    Raha  , Taktay   Rahay

Geeli   Aankhon   ,  Ukharray  Lafzon    Say   Dua    Detay   Huay

Jaany   Kiss    Dehshat   Ka    Saaya    Uss   Ko   Mohr-e-Lab   Hua

Dar   Raha   Hay   Wo   Mujhay   Khull   Kar   Sadaa    Detay    Huay

Be    Amaan   Tha   Aap   Lekin    Mojza    Hay   Yeh     RIAZ

Haala-e-Shafqat Th a   Uss    Ko    Aasra    Detay   Huay

Poet: Riaz   Majeed

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -