" الیکشن میں دھاندلی ہوئی تو نتیجہ قبول نہیں کروں گا" ڈونلڈ ٹرمپ کا اعلان، امریکی سیاست بھی پاکستان کے نقشِ قدم پر

" الیکشن میں دھاندلی ہوئی تو نتیجہ قبول نہیں کروں گا" ڈونلڈ ٹرمپ کا اعلان، ...

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) ہمارے ہاں روایت ہے کہ الیکشن ہارنے والی سیاسی جماعت ہمیشہ الیکشن کے نتائج تسلیم کرنے سے انکار کرتی اور دھاندلی کے الزامات عائد کرتی ہے۔ اب صدر ڈونلڈٹرمپ کے طفیل امریکہ میں بھی دھاندلی اور نتائج نہ تسلیم کرنے کی باتیں چل نکلی ہیں اور وہ بھی الیکشن ہونے سے پہلے ہی۔ عالمی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق صدر ٹرمپ ڈاک کے ذریعے بیلٹ پیپرز کی ترسیل پر پہلے بھی کڑی تنقید کر چکے ہیں اور کہہ چکے ہیں کہ اس طریقے سے الیکشن ہائی جیک ہو سکتے ہیں اور من پسند نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں۔ گزشتہ روز صدارتی مباحثے کے دوران میزبان کے سوال کا جواب دیتے ہوئے صدر ٹرمپ نے ایک بار پھر وارننگ دے ڈالی کہ اگر بڑی تعدادمیں شکایات آئیں تو وہ الیکشن نتائج کو تسلیم نہیں کریں گے۔

رپورٹ کے مطابق اس مذاکرے میں میزبان کی طرف سے سوال پوچھا گیا تھا کہ ”کیاآپ نومبر الیکشن کے نتائج کو تسلیم کریں گے؟“ اس کے جواب میں صدر ٹرمپ نے کہا کہ ”اگر ہزاروں بیلٹس مشکوک ہوئے تو میں نتائج تسلیم نہیں کروں گا۔“ میزبان نے ان سے ذیلی سوال پوچھا کہ کیا آپ اپنے حامیوں کو پولنگ کے دوران پرامن رہنے کی تلقین کریں گے تو صدر ٹرمپ نے کہا کہ ’میں اپنے حامیوں سے کہوں گا کہ وہ پولنگ سٹیشنز میں جائیں اور نظر رکھیں کہ وہاں کیا ہو رہا ہے، کیونکہ غالب امکان ہے کہ وہاں کچھ برا ہو گا۔ فلاڈلفیا میں بھی یہی کچھ ہوا تھا۔ وہاں انہوں نے میرے حامیوں کو اٹھا کر پولنگ سٹیشنز سے باہر پھینک دیا اور انہیں اندر نہیں گھسنے دیا، کیونکہ وہاں بھی پولنگ سٹیشنز کے اندر بری چیزیں ہو رہی تھیں۔“

مزید :

بین الاقوامی -