بھارت ممبئی حملوں کے 3گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرانے کیلئے پاکستانی جوڈیشل کمشن کو اجازت دیگا

بھارت ممبئی حملوں کے 3گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرانے کیلئے پاکستانی جوڈیشل ...

  

تہران(آن لائن) بھارت نے پاکستانی جوڈیشل کمیشن کو ممبئی حملوں نے گرفتار ملزم اجمل قصاب کے ٹرائل سے متعلق تین گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرانے کی اجازت دینے کا فیصلہ کرلیا ہے۔بھارتی اخبار ہندوستان ٹائمز کے مطابق سیکرٹری خارجہ رانجان تھائی نے تہران میں غیر وابستہ ممالک تحریک کے سربراہی اجلاس کے موقع پر صدر آصف علی زرداری اور وزیر اعظم منموہن سنگھ کے درمیان40 منٹ تک ہونے والی ملاقات کے بعد گفتگو کرتے ہوئے بتایا ہے کہ بھارتی حکومت نے ممبئی حملوں کے واحد زندہ بچ جانے والے گرفتار ملزم اجمل قصاب کے ٹرائل سے متعلق 3 گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرانے بارے پاکستانی درخواست پر مثبت رویہ اپنایا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں وزارت داخلہ کے ذریعے پاکستانی جوڈیشل کمیشن سے کچھ وضاحت طلب کی جارہی ہے جس کے بعد جوڈیشل کمیشن کو اجمل قصاب کا بیان ریکارڈ کرنے والے مجسٹریٹ اور اس کا معائنہ کرنے والے 2 ڈاکٹروں سے سوالات کرنے کی اجازت دے دی جائے گی ۔سیکرٹری خارجہ کا کہنا تھا کہ منموہن سنگھ نے صدر آصف علی زرداری کی جانب سے دی گئی دورہ پاکستان کی دعوت قبول کر لی ہے اور کسی مناسب وقت میں پاکستان کا دورہ کرنے پر رضا مندی ظاہر کر دی ۔رپورٹ کے مطابق صدر آصف علی زرداری اور بھارتی وزیر اعظم کے درمیان ملاقات میں بھارت کی جانب سے ممبئی حملوں کے ملزمان کے خلاف مقدمے کی کارروائی تیز کرنے کا مطالبہ دوہرایا گیا جبکہ صدر آصف علی زرداری نے موقف اختیار کیا کہ ممبئی حملوں سے متعلق ان تین گواہوں سے سوالات پاکستانی جوڈیشل کمیشن کی قانونی ضرورت ہے اور جوڈیشل کمیشن کو ان گواہوں تک رسائی حاصل نہ ہونے کی وجہ سے ہی مقدمے کی کارروائی سست روی کا شکار ہے۔

مزید :

صفحہ اول -