پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں اضافے پر شہریوں کا شدید ردعمل ،پمپوں پر فروخت رک گئی

پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں اضافے پر شہریوں کا شدید ردعمل ،پمپوں پر فروخت ...

  

لاہور(وقائع نگار) وفاقی حکومت کی جانب سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں متوقع اعلان کی خبروں کے ساتھ ہی صوبائی دارالحکومت میں واقع پٹرول پمس مالکان نے پٹرولیم مصنوعات کی فروخت بند کر دی،60 فیصد سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، پٹرولیم پمپوں پر گاڑی، رکشوں اور موٹر سائیکل کی بھی قطاریں لگی رہی جبکہ پٹرول پمپ انتظامیہ سٹاک ختم ہونے کا بہانہ بناتے شہریوں سے ناروا رویہ برتتی رہی ، ذرائع کا کہنا ہے کہ پٹرول پمپ مالکان نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ اور زائد منافع کی رینج میں پٹرولیم مصنوعات کی پیدا کی ہوئی ہے، جس پر حکومت کو سخت ایکشن لینا چاہیے کیونکہ پٹرول کی عدم دستیابی کے باعث شہریوں کو مزید مشکلات کا سامنا رہا ہے۔ سیاسی و مذہبی جماعتوں نے دس جماعتوں نے دس روز میں دوسری بار پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے قیمتوں کو ریگولیٹ کرنے کے فارمولے کو ختم کرنے اور قیمتوں میں کمی کر کے انہیں منجمد کرنے کا مطالبہ کیا ہے، ان جماعتوں کے رہنماﺅں نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کا ظالمانہ اقدام قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکمرانوں نے اپنے انتخابی اخراجات پورے کرنے کیلئے بے بس عوام کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالنے کا نیا طریقہ ایجاد کر لیا ہے جو کسی بھی قابل قبول نہیں، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر خاموش نہیں بیٹھیں گے بلکہ سڑکوں پر آ کر حکمرانوں کو قیمتیں واپس لینے پر مجبور کرینگے، جماعت اسلامی کے امیر سید منور حسن، سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ، فرید پراچہ، ڈاکٹر وسیم اختر، حافظ سلمان بٹ نے اپنے بیان میں کہا کہ تیل کی قیمتوں میں اضافے پر شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تیل کی قیمتوں میں اضافے پر شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکمرانوں نے شرم وحیا کے دامن کو چھوڑ دیا ہے اور یہ مہنگائی کے مارے عوام کے جسم سے خون کا آخری قطرہ بھی نچوڑ لینا چاہتے ہیں۔ مسلم لیگ ن کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل احسن اقبال، سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مشاہد اللہ خان سینیٹر پرویز رشید، صدیق الفاروق، خواجہ سعد رفیق، راجہ اشفاق سرور، ڈاکٹر زمرد یاسمین، رانا شمائلہ رانا نے کہا کہ حکمران اب اپنے اقدامات سے عوام کے عیض و غضب کو دعوت دے رہے ہیں، حکمران یاد رکھیں انکے دن گنے جا چکے ہیں اور انہیں عوام پر ڈھائے جانیوالے ایک ایک مظالم کا حساب دینا ہو گا، رہنماﺅں نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافہ کے خلاف ہر فورم پر آواز بلند کریں گے، حکومت فوری طور پر قیمتوں کو واپس لے اور قیمتوں کو ریگولیٹ کرنے کے فارمولے کو ختم کر کے قیمتوں میں کمی لائی جائے اور انہیں منجمد کیا جائے، ن لیگ کے رہنماﺅں نے کہا کہ حالیہ اضافے سے ملک میں مہنگائی کا نہ رکنے والا طوفان آئے گا، تحریک انصاف کے مرکزی رہنما شاہ محمود قریشی، احسن رشید، ڈاکٹر شاہد صدیق، محمود الرشید، شفقت محمود، ابرار الحق، سلونی بخاری نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں پر اضافے پر اپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکمران جاتے جاتے بھی غریب عوام کے جسم سے خون کا آخری قطرہ بھی نچوڑنا چاہتے ہیں، پاکستانی عوام روٹی، کپڑا اور مکان کا وعدہ کرنے والوں کے ہاتھوں برباد ہو رہی ہے، حکمران ملک سے غربت کی بجائے غریب مکاﺅ ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں، تحریک انصاف پٹرولیم کی قیمتوں میں اضافہ کی شدید مذمت کرتی ہے، حکمران اپنے اربوں روپے کی کپرشن کے لئے غریب عوام کی جیبوں پر ڈاکے ڈال رہے ہیں۔ لاہور چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے حکومت سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کو فوری واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوءکہا ہے کہ اگر ایسا نہ گیا تو معیشت، صنعت و تجارت اور عوام بہت بری طرح متاثر ہونگے، اپنے ایک بیان میں لاہور چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر عرفان قیصر شیخ، سینئر نائب صدر کاشف یونس مہر اور نائب صدر سعیدہ نذر نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں پہلے ہی بلند ترین سطح پر ہیں اور ان میں مزید اضافہ اونٹ کی کمر پر آخری تنکا ثابت ہو گا، انہوں نے کہا قیمتوں میں اضافے سے افراط زر کی شرح اور مارک اپ کے نرخ بڑھیں گے اور تمام معاشی پہیہ بہت بری طرح متاثر ہو گا۔

مزید :

صفحہ اول -