چوکی انچارج نے120روپے دیکر لاش گندے نالے میں پھینکنے کا کہا تھا، ڈرائیور جمیل

چوکی انچارج نے120روپے دیکر لاش گندے نالے میں پھینکنے کا کہا تھا، ڈرائیور جمیل

  

لاہور(کرائم رپورٹر)بھاٹی گیٹ کے علاقہ میں خاتون کی نعش کو رکشہ ڈرائیور کے ذریعے ٹھکانے لگانے والا بااثر چوکی انچارج تاحال گرفتار نہ ہوسکا پراسرار طور پر ہلاک ہونے والی خاتون کے ورثاءکی تلاش کے لیے فنگر پرنٹ کے ذریعے کوششیں کی جارہی ہیں ۔بتایاگیا ہے کہ دور وز قبل بھاٹی گیٹ کے گندے نالے میں معمر خاتون کی نعش پھینکتے ہوئے گرفتار ہونے والے رکشہ ڈرائیور جمیل نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا ہے کہ اسے چوکی انچارج شاہدرہ ریلوے پولیس کے رحمت نے 120روپے دے کر نعش کو گندے نالے میں پھینک کرآنے کا کہاتھا اور گرفتار ہونے والے دوسرے ملزم سماءخان کو اس کے ساتھ بھیجا تھا بھاٹی گیٹ انوسٹی گیشن پولیس کے مطابق ملزم سماءخان کا ذہنی توازن درست نہیں ہلاک ہونے والی خاتون نے پھول دار کپڑے پہن رکھے تھے اور اسکی عمر پچاس سال کے قریب ہے ذرائع کے مطابق خاتون کو زخمی حالت میں طبی امدادکیلئے یے ہسپتال پہنچایا جارہاتھا جو کہ راستہ میں دم توڑ گئی تاہم اس کی شناخت نہیں ہوسکی راستہ میں دم توڑ گئی اس کی تلاش کے لیے فنگر پرنٹس حاصل کیے ہیں جس سے ورثاءکا سراغ لگا نے کے بعد اصل حقائق سامنے آئیں گے تاہم واقعہ کے بعد چوکی انچارج رحمت تاحال منظر عام سے غائب ہے جس کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -