امریکہ نے اقوام متحدہ کی منظوری کے بغیر ہی شام پر حملے کا فیصلہ کرلیا، برطانیہ کی حمایت، بھرپورجواب دیں گے:شام ، امریکہ جوکہتاہے ، کرتابھی ہے: صدراوباما

امریکہ نے اقوام متحدہ کی منظوری کے بغیر ہی شام پر حملے کا فیصلہ کرلیا، ...

کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کی تصدیق یا تردید میں مزید تین ہفتے لگ سکتے ہیں: معائنہ ٹیم

امریکہ نے اقوام متحدہ کی منظوری کے بغیر ہی شام پر حملے کا فیصلہ کرلیا، برطانیہ کی حمایت، بھرپورجواب دیں گے:شام ، امریکہ جوکہتاہے ، کرتابھی ہے: صدراوباما

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

واشنگٹن،لندن ، قاہرہ، ہیگ(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی صدر باراک اوباما نے کہا ہے کہ امریکہ نے شام پر حملے کا فیصلہ کر لیا ہے اور شام پر حملے کیلئے اقوام متحدہ کی منظوری ضروری نہیں ،ہم کسی بھی وقت شام پر حملہ کر سکتے ہیں۔دوسری طرف شام پر حملے کی اجازت کیلئے بل کانگرس کو بھیج دیاگیاہے جبکہ کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کا جائزہ لینے والی اقوام متحدہ کی ٹیم کا کہناہے کہ حاصل کیے گئے نمونوں کے معائنے میں مزید تین ہفتے لگ سکتے ہیں ۔وائٹ ہاﺅس میں میڈیاکو بریفنگ دیتے ہوئے صدرباراک اوباما نے واضح کیا کہ انٹیلی جنس رپورٹس میں شام میں کیمیائی حملے کی تصدیق ہوئی ہے اور 21اگست کا کیمیائی حملہ 21ویں صدی کا بدترین واقعہ اور انسانیت پر حملہ تھا۔اُنہوں نے کہاکہ شام کی سرزمین پر اپنے فوجی نہیں بھیجیں گے لیکن محدود پیمانے پر ٹارگٹس کو نشانہ بنانے کا ارادہ ہے، فیصلہ کیا ہے کہ شام میں اہداف پر حملہ ہونا چاہیے اور میرے پاس کوئی بھی ایکشن لینے کا پورا حق ہے۔ صدراوباما کاکہناتھا کہ شام پر فوجی کارروائی کے لیے کوئی ٹائم لائن نہیں دے سکتے، یہ حملہ کسی بھی وقت کیاجاسکتا ہے،تاہم اسکے لیے کانگریس سے منظوری لی جائے گی۔صدراوباما نے اس بات پرافسوس کااظہارکرتے ہوئے کہاکہ اقوام متحدہ شام کے حوالے سے کسی نتیجے پر پہنچنے پرناکام ہوگیا، شام میں کارروائی کے لیے اقوام متحدہ کی منظوری درکار نہیں رہی، دنیاکوبتاناہوگا کہ امریکہ جوکہتا ہے وہ کرتا بھی ہے۔اُنہوں نے کہاکہ شام میں جمہوریت کے لئے حملے کا فیصلہ درست ہے،باغیوں کی حمایت جاری رکھیں گے ،امریکہ نے افغانستان کے لئے بھی مشکل فیصلہ لیا تھا۔اس سے پہلے روسی صدر پیوٹن کاکہناتھا کہ شام پر کیمیائی حملے کا الزام سراسربے بنیادہے، اگر امریکہ کے پاس شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے شواہد موجود ہیں تو وہ اُنہیں اقوام متحدہ کے معائنہ کاروں اور سلامتی کونسل میں پیش کرے۔ ادھرشام کے وزیراعظم کاکہنا ہے کہ شامی فوج ممکنہ مغربی حملے کا جواب دینے کے لیے مکمل طورپر تیارہے۔ دوسری جانب برطانوی وزیراعظم نے کہا ہے کہ شام کے حوالے سے امریکی صدراوباما کے بیان کی حمایت کر تا ہوں۔ اُدھرشام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کی تحقیق کرنے والی اقوامِ متحدہ کی ٹیم کا کہنا ہے کہ شام سے حاصل کیے گئے نمونوں کے معائنے میں 3ہفتے لگیں گے۔شام میں مبینہ کیمیائی حملوں سے متاثرہ علاقوں کے دورے کے بعد اقوامِ متحدہ کی ٹیم ہالینڈ کے دار الحکومت ہیگ پہنچ گئی۔20 ممبران پر مشتمل ٹیم نے دمشق کے نواحی علاقوں سے کیمیائی حملوں میں متاثر ہونے والے افراد کے نمونے حاصل کیے تھے۔ ٹیم کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ان نمونوں کے مکمل تجزئیے میں 3ہفتے لگ جائیں گے جس کے بعد ہی حتمی رپورٹ جاری کی جائے گی۔