جعلی اسنادکے حامل 279ٹریفک وارڈن برطرف، آٹھ جاں بحق وارڈن سمیت تمام کے خلاف جعل سازی کے مقدمات درج

جعلی اسنادکے حامل 279ٹریفک وارڈن برطرف، آٹھ جاں بحق وارڈن سمیت تمام کے خلاف ...
جعلی اسنادکے حامل 279ٹریفک وارڈن برطرف، آٹھ جاں بحق وارڈن سمیت تمام کے خلاف جعل سازی کے مقدمات درج

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پنجاب حکومت نے ترقی پانے کیلئے جعلی دستاویزات استعمال کرنیوالے 279 ٹریفک وارڈنز کو برطرف کرکے ان کے خلاف مقدمات درج کرادیئے ہیںجن میں دنیا سے رخصت ہوجانیوالے آٹھ سے زائد وارڈن بھی شامل ہیں ۔ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت نے ٹریفک واردنز کی جانب سے ترقی کے لئے جمع کرائی گئیں تعلیمی اسناد، برتھ سرٹیفیکیٹ اور دیگر اسناد کی تحقیقات کرائی تھیں جس پر صرف لاہور میں 279 ٹریفک وارڈنز جعل سازی کے مرتکب پائے گئے ہیں۔ ان وارڈنز کو فوری طور پر برطرف کرکے ان کے خلاف جعل سازی کے مقدمات بھی درج کرادیئے گئے ہیں۔ذرائع نے بتایاکہ آٹھ سے زائد ایسے ٹریفک وارڈنز کے خلاف تھانہ چوہنگ میں مقدمات درج کیے گئے ہیں جو مختلف واقعات میں جاں بحق ہوچکے ہیں جبکہ اِنہی میں سری لنکن ٹیم پر حملے کے دوران لبرٹی چوک میں جان قربان کرنیوالے شہید وارڈن کا نام بھی شامل ہے ۔دوسری جانب برطرف کئے جانے والے ٹریفک وارڈنز نے ناصر باغ پر احتجاج کرتے ہوئے فوری طور پر بحالی کا مطالبہ کیا ہے۔ذرائع کے مطابق جعلی ڈاکومنٹس کی تصدیق کے لئے ایک ڈی ایس پی کی سربراہی میں کمیٹی قائم کی گئی جس نے موقف بھی سنا۔بتایاگیاہے کہ پنجاب حکومت کی جانب سے مختلف اداروں میں بھرتی کئے جانے والے ملازمین کی اسناد کی جانچ پڑتال کی جارہی ہے تاکہ اہل افراد کو سامنے لایا جاسکے۔