غزہ سے فوجیوں کے انخلا کا اعلان نیتن یاھو کا کھلا اعتراف شکست ہے: حماس

غزہ سے فوجیوں کے انخلا کا اعلان نیتن یاھو کا کھلا اعتراف شکست ہے: حماس

  

 غزہ(اے این این)اسلامی تحریک مزاحمت حماس نے کہا ہے کہ اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو کی جانب سے غزہ کی پٹی سے فوجیوں کی واپسی کے اعلان کے لیے مختلف جواز پیش کرکے خود ہی اپنی شکست پر مہر تصدیق ثبت کردی ہے۔فلسطین کے مطابق حماس کے ترجمان ڈاکٹر سامی ابو زھری کا کہنا ہے کہ صہیونی وزیراعظم کو یہ اندازہ ہے کہ غزہ کی پٹی میں اس کے فوجیوں کی زندگی مستقل خطرے میں ہے۔ فوجیوں کی جانوں کو خطرات لاحق تھے اور وہ فلسطینی مزاحمت کاروں کے ہاتھوں یرغمال بنائے جاسکتے تھے۔

 اسی خوف کی بنا پر نیتن یاھو نے غزہ کی پٹی سے اپنی فوجیوں کی واپسی ہی میں عافیت سمجھی ہے۔ صہیونی فوج کی واپسی کا اعلان ہی دراصل دشمن کا اعتراف شکست اور فلسطینی تحریک مزاحمت کی فتح وکامرانی کی علامت ہے۔خیال رہے کہ گزشتہ روز اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے اپنی فوج کی غزہ کی پٹی کے محاذ سے واپس بلائے جانے کے جواز پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر فوج کو غزہ کے اندر چھوڑا جاتا تو ان کی جانوں کو خطرات لاحق تھے۔ فلسطینی کسی بھی وقت فوجیوں کو اغوا یا ان پر مہلک قاتلانہ حملے کرسکتے تھے۔

مزید :

عالمی منظر -