اردن فلسطینیوں کی مسلح تحریک مزاحمت کے حق اور اسرائیل کےخلاف ملین مارچ

اردن فلسطینیوں کی مسلح تحریک مزاحمت کے حق اور اسرائیل کےخلاف ملین مارچ

  

 عمان (اے این این)فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں صہیونی ریاست کی وحشیانہ بمباری کے خلاف اور فلسطینیوں کی مسلح تحریک مزاحمت کی حمایت میں اردن میں ایک عظیم الشان عوامی جلسے کا اہتمام کیا گیا۔ جلوس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی اور فلسطینی مسلح تحریک کی حمایت اور اسرائیل کی مخالفت میں شدید نعرے بازی کی گئی۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے ملین مارچ کی کال مذہبی، سیاسی جماعتوں، وکلا برادری اور سول سوسائٹی کی جانب سے دی گئی تھی۔ نماز جمعہ کے اجتماعات کے بعد عمان سے متصل شہر طبربور میں ہزاروں افراد جمع ہوئے۔ شرکا نے ہاتھوں میں فلسطینی پرچم، کتبے اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر صہیونی ریاست کی سفاکیت کےخلاف اور فلسطینیوں کی مسلح جدو جہد کی حمایت میں نعرے درج تھے۔اردن میں منعقدہ اس عظیم الشان عوامی اجتماع سے اسلامی تحریک مزاحمت"حماس" کے سیاسی شعبے کے سربراہ خالد مشعل نے ٹیلیفونک خطاب بھی کیا۔

 انہوں نے کہا کہ غزہ کی تحریک مزاحمت نے صہیونی دشمن کےخلاف فتح کی ایک شاندار مثال قائم کی ہے۔ اسرائیل نے جس قدر جارحیت اور وحشیانہ طاقت کے استعمال کا مظاہرہ کیا،غزہ کے عوام نے اسی قدر جرات، ہمت اور اولوالعزمی کامظاہرہ کرکے دشمن کو چاروں شانے چت کر دیا۔خالد مشعل نے اردنی حکومت اور پوری قوم کی جانب سے فلسطینیوں کی ہرممکن مدد پر ان کا شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی کہ عمان حکومت اور اردنی قوم فلسطینیوں کو مشکل میں تنہا نہیں چھوڑیں گے۔ خالد مشعل کا کہنا تھا کہ عمان میں لاکھوں کا مجمع اس بات کا بین ثبوت ہے کہ اردنی قوم اور حکومت فلسطینیوں کی پشت پر کھڑی ہے۔مرکز اطلاعات فلسطین کے نامہ نگار نے اپنے مراسلے میں بتایا کہ اردن کی مذہبی اور سیاسی جماعتوں نے گذشتہ روز کے عظیم الشان اجتماع کے لیے "ہم سب مزاحمت کار ہیں " کا عنوان مختص کیا تھا اور اسے ملک بھر میں بڑے پیمانے پر پذیرائی ملی ہے۔ فلسطینیوں کی حمایت میں منعقدہ ریلی سے اردن میں اخوان المسلمون کے رہ نما ڈاکٹر ھمام سعید اور دوسرے مقامی قائدین نے خطاب کیا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ مسجد اقصی اور بیت المقدس جلد انشا اللہ پنجہ یہود سے آزاد ہوں گے۔

مزید :

عالمی منظر -