پی ٹی وی پر قبضہ، فوج نے پی اے ٹی کارکنان کو باہر نکال دیا ،مظاہرین وزیراعظم ہاﺅس کے سامنے بھی پہنچ گئے

پی ٹی وی پر قبضہ، فوج نے پی اے ٹی کارکنان کو باہر نکال دیا ،مظاہرین وزیراعظم ...
پی ٹی وی پر قبضہ، فوج نے پی اے ٹی کارکنان کو باہر نکال دیا ،مظاہرین وزیراعظم ہاﺅس کے سامنے بھی پہنچ گئے

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاک فوج کے دستے نے پاکستان ٹیلی ویژن پر دھاوابولنے والے پاکستان عوامی تحریک کے کارکنان کو باہر نکال دیاجس کے بعدبند ہونیوالی نشریات ایک مرتبہ پھر بحال کردی گئیں جبکہ کارکنان وزیراعظم ہاﺅس کے باہر بھی پہنچ گئے جہاں آرمی آفیسر ز نے اُنہیں مزیدآگے بڑھنے سے روکدیاہے جس کا اعلان ڈاکٹرطاہرالقادری نے بھی کیا اوربتایاکہ پورے علاقے سے پولیس بھاگ گئی جبکہ پاک سیکریٹریٹ کا گیٹ توڑ کر مظاہرین لان میں داخل ہوگئے اور گاڑیوں کی توڑ پھوڑ کے بعد خار دار تاریں بچھادیں جبکہ اب تک جھڑپوں میں اسلام آباد پولیس کے گذشتہ روز چارج سنبھالنے والے ایس ایس پی عصمت اللہ جونیجوسمیت 300کے قریب افرادزخمی ہیں جبکہ پولی کلینک ہسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پیر کی صبح سے ایک مرتبہ پھر سیکیورٹی فورسز اور دھرنے دینے والے مظاہرین میں جھڑپیں شروع ہوئیں اور شدید بارش میں مظاہرین کے پتھراﺅکے نتیجے میں پولیس اہلکار پیچھے ہٹنے پر مجبور ہوگئے اور وہ پاک سیکریٹریٹ پہنچنے میں کامیاب ہوگئے، مین گیٹ توڑنے کے بعد پارکنگ میں گھس گئے تاہم اندر موجود فوج اور رینجرز کے اہلکاروں نے شرکاءکو عمارت میں داخلے سے روکدیا جس پر مظاہرین نے خاردار تاریں بچھادیں اور پاک سیکریٹریٹ سے آگے بڑھ گئے جس کے بعد اپنی کامیابیوں کا اعلان کرتے ہوئے مزید کارکنان کو آگے پہنچنے کے اعلانات کردیئے گئے۔ مظاہرین اور پولیس کے درمیان تصادم کے نتیجے میں ایس ایس پی عصمت اللہ جونیجوسمیت چار پولیس اہلکار اوردرجنوں مظاہرین زخمی ہوگئے جبکہ پولی کلینک ہسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی۔

وزیراعظم ہاﺅس کی طرف جانیوالے راستوں پر فوج کے درجنوں جوان تعینات کردیئے گئے تاہم کسی نہ کسی طرح کارکنان بچ بچاﺅ کرکے وزیراعظم ہاﺅس کے آگے پہنچ گئے جہاں مبینہ طورپر ایک فوجی افسر نے اعلان کیاکہ مظاہرین کامیاب ہوگئے ہیں لیکن اب مزید آگے بڑھنے سے گریز کریں ۔

اُدھر مظاہرین نے پاکستان ٹیلی ویژن نیوز کے دفتر پر قبضہ کرکے نشریات بھی بند کرادیںاور یہی وہ واحد طریقہ تھا جس کی انگریزی نشریات کے ذریعے دنیا بھر میں پاکستان کا موقف پہنچ رہاتھا لیکن مظاہرین نے دنیا بھر میں ” پاکستان کے چہرے“کو کالاکردیا۔ مظاہرین دروازے توڑکر اندر داخل ہوئے اور ہرکسی پر تشدد شروع کردیا اورملازمین کو اپنی نشستوں سے اُٹھادیا جس کے بعد ’پی ٹی وی ‘ کی کالی سکرین چلناشروع ہوگئی اور صرف ٹکر(پٹی) چلتی رہی جس کے بعد پاک فوج اور رینجرز کے اہلکارموقع پر پہنچ گئے ۔میجر سرفراز کی سربراہی میں پی ٹی وی پہنچنے والے فوجی دستے کو اپنے درمیان پاکر مظاہرین نے خوشی کااظہار کیااور پاک فوج کے حق میں نعرہ بازی شروع کردی اور ساتھ تصاویر بنوائیں۔ آخری اطلاعات کے مطابق پاک فوج کے اہلکار پرامن طریقے سے مظاہرین کو باہرنکالنے میں کامیاب ہوگئے ہیں اورپی ٹی وی کی عمارت کا کنٹرول پاک فوج نے سنبھال لیا ۔

پولیس ذرائع نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایاکہ اعلیٰ حکام کی طرف سے طاقت کا استعمال نہ کرنے کے احکامات دیے گئے ہیں اوراسی وجہ سے سینکڑوں لوگوں نے ہزاروں پولیس اہلکاروں کو پیچھے ہٹنے پر مجبور کردیا۔پی ٹی وی ذرائع کے مطابق کارکنان کی ایک بھاری تعداد نے سرکاری ٹی وی کی عمارت کو بھی حصار میں لے لیاہے جبکہ آنسو گیس کی شیلنگ کی وجہ سے میڈیا ملازمین کو کام کرنے میں بھی مشکلات کا سامناہے اور عمارت میں داخل ہونیوالے دھرنوں کے شرکاءنے پی ٹی وی کے کیفے ٹیریاپر بھی قبضہ کرلیاگیاجہاں مظاہرین نے ”ضیافت“ بھی اُڑائی اور لوٹ مار کا سلسلہ شروع کردیا۔بتایاگیاہے عمارت میں موجودمختلف حکمرانوں اور اعلیٰ شخصیات کی تصاویر بھی توڑ دی گئیں ۔

پی ٹی وی کے سرکاری ذرائع کے مطابق پی ٹی وی کی عمارت میں گھسنے والے کارکنان کے پاس عوامی تحریک کے جھنڈے تھے او ربظاہر تحریک انصاف کاکوئی کارکن شامل نہیں تھا، مظاہرین نے تاریں کھینچ کر الگ کردیں جس سے ٹرانسمشن معطل ہوگئی ۔

دوسری طرف پی اے ٹی کے رضاکاروں نے ڈاکٹرطاہرالقادری کے کنٹینر کو اپنے حصارمیں لے رکھاہے۔ڈاکٹرطاہرالقادری کاکہناتھاکہ حکمرانوں جمہوریت اور مذاکرات پر یقین نہیں رکھتے ،شریف برادران نے اپنا نام جمہوریت رکھ لیاہے ۔ اُنہوں نے کہاکہ حکمرانوں نے ملک کا بادشاہت سے یرغمال بنارکھاہے ، انقلاب کے ذریعے عزت اور احترام دینا ہم سب کا فرض ہے ، حکمران صرف ظلم اور جبر پر یقین رکھتے ہیں ، آرمی چیف سے بھی شاید اب رابطہ نہیں ہوگا۔ اُنہوں نے کارکنان کو ہدایت کی کہ تمام بڑی سرکاری عمارتوں کی سیکیورٹی کی ذمہ داری فوج کے سپرد ہے اور کارکنان مخصوص عمارتوں کے باہر احتجاج کریں لیکن اندر گھسنے کی کوشش مت کریں ۔

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان ایک مرتبہ پھر کنٹینر کی چھت پر آئے اور کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ تصادم کی اطلاعات آرہی ہیں ، عوامی تحریک اور تحریک انصاف کے کارکن پرامن رہیں اور اپنے مقصد پر توجہ مرکوز رکھیں ۔

اس سے قبل جڑواں شہروں میں بارش ہوئی جس سے موسم خوشگوار ہوگیااور بارش کے دوران بھی پولیس اور مظاہرین میں آنکھ مچولی جاری ہے جبکہ خواتین اور بچے پارلیمنٹ کے لان میں موجود ہیں۔

سرکاری ذرائع نے بتایاکہ پاک سیکریٹریٹ میں تمام دفاترکھول دیئے گئے ہیں اور ملازمین کی حاضری شروع ہوگئی۔

مزید :

قومی -Headlines -